اب چہرہ ہی بتادے گا کہ کرونا ہے یا نہیں

فیشل اسکینر متعارف ہوگیا

ا ب کسی شخص کا صرف چہرہ دیکھ کر ہی پتہ لگایا جاسکے گا کہ اسے کرونا کا مرض لاحق ہے یا نہیں۔

ابو ظہبی میں کرونا کی تشخیص کرنے کے لیے پہلا فيشل اسکينرمتعارف کروا دیا گیا ہے جس سے کسی انسان کا چہرہ دیکھ کر یہ معلوم ہوجاتا ہے کہ خون میں آکسیجن لیول کتنا اور دل کا کیا حال ہے، غرض یہ کہ کہیں وہ کرونا وائرس سے متاثر تو نہیں ہوگیا۔اس مشین کو ابو ظہبی کے شاپنگ مالزاور چند رہائشی مقامات پراستعمال کيا جارہا ہے۔ علاوہ ازیں یہ اسکینر زمینی اورفضائی اینٹری پوائنٹس پر آنے والوں کو بھی اسکين کررہا ہے۔يہ اسکینر اليکٹروميگنيٹک لہروں کے ذريعے ممکنہ انفيکشن ڈھونڈ ليتا ہے اور کرونا وائرس کے آر اين اے پارٹيکلز کی موجودگي کا پتہ لگا ليتا ہے۔اس ڈيوائس کے دو حصے ہيں، ایک اسکينر اور دوسرا ای ڈی ای ڈيٹيکٹر۔ اسے 5 ميٹرکے فاصلے سے استعمال کيا جاسکتا ہے اور اس کی سب سے اچھی بات يہ ہے کہ یہ ايک سيکنڈ سے بھی کم وقت ميں رزلٹ دے دیتا ہے۔

متعلقہ خبریں