اداکارہ حرامانی کی سابقہ منیجر کیساتھ مبینہ مارپیٹ،معاملہ تھانےپہنچ گیا

اداکارہ حرامانی اور ان کی سابقہ منیجر کے درمیان جھگڑا شدت اختیار کرنے لگا، مبینہ مارپیٹ حراساں ، دھمکیاں دینے کا معاملہ تھانے پہنچ گیا۔

اداکارہ حرامانی کے خلاف کراچی پولیس کو باقاعدہ شکایت موصول ہوگئی، شکایت ہیومن رائٹس کمیشن پاکستان کی جانب سے بھیجی گئی ہے۔

شکایت میں حرامانی، طلحہ جمال پرمبینہ ہراساں، مارپیٹ اور سنگین نتائج کی دھمکیاں دینے کا الزام لگایا گیا تاہم ایڈیشنل آئی جی کراچی آفس نے شکایت ناظم آباد تھانے کو بھیج دی۔

پولیس نے سابقہ منیجر نزہت عابد سے تمام کوائف اور ثبوت مانگ لئے جبکہ پولیس نے ثبوت، دھمکی آمیز میسجز اور تمام تفصیلات کے ساتھ نزہت عابد جعفری کو بیان قلمبند کرنے کے لئے بھی بلوالیا۔

ناظم آباد پولیس نے درخواست پر کارروائی کرکے رپورٹ ہومن رائٹس کمیشن آفس پاکستان اور ایڈشنل آئی جی کو ارسال کردی۔

ایس ایچ او ناظم آباد راو دلشاد کے مطابق نزہت عابد جعفری کی رہائش ناظم آباد تھانے کی حدود میں ہے جبکہ نزہت عابد کا دفتر درخشاں تھانے کی حدود میں آتا ہے۔

ایس ایچ او ناظم آباد کا کہنا ہے کہ رپورٹ پر اعلی حکام قانون کے مطابق کارروائی کرینگے، تاحال ناظم آباد تھانے میں اس حوالے سے کوئی مقدمہ درج نہیں ہوا۔

چند روز قبل بھی نزہت عابد نے انسٹاگرام پر ایک ویڈیو پوسٹ کرتے ہوئے ایف آئی اے سائبر کرائم کے حکام سے شکوہ کیا تھا ۔

یاد رہے کہ گزشتہ برس کے آخر میں نزہت عابد جعفری کا ایک بیان سامنے آیا تھا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ حرا مانی نے مجھ پر تشدد کیا ،گالیاں دی ہیں،اس حوالہ سے قانون نافذ کرنے والے اداروں کو آگاہ کر چکی ہوں تاہم اس حوالے سے اداکارہ کی جانب سے تاحال خاموشی برقرار ہے ۔

تازہ ترین

اسلام آباد: پولیس اوردہشتگردوں میں مقابلہ اہلکارشہید، 2ملزمان ہلاک
کوئٹہ: خواتین کیساتھ ناروا سلوک پرایڈیشنل ایس ایچ او اوراہلکارمعطل
مکار سیاستدانوں اورمافیاز نے اداروں کو بھی کرپٹ کردیا، وزیراعظم
ابوظہبی: مشتبہ ڈرون حملہ، ٹینکرزدھماکوں میں پاکستانی سمیت 3افراد ہلاک