اسرائیل، فلسطین کشیدگی برقرار،9بچوں سمیت 24فلسطینی شہید

اب بھی 700زائد فلسطینی زخمی ہوچکے ہیں

فلسطین کی مزاحمتی تنظیم حماس کی جانب سے کیےگئے راکٹ حملوں کے جواب اسرائیلی فوج نےغزہ کی پٹی پر فضائی بمباری کرتے ہوئے 9بچوں سمیت 24افراد کو شہید کردیا۔

ایسوسی ایٹڈ پریس کےمطابق ​اسرائیل نے پیر کی شب غزہ میں فضائی کارروائی شروع کی اور یہ سلسلہ منگل کی صبح تک جاری رہا۔ غزہ کی پٹی کے جنوبی شہر خان یونس میں اسرائیلی ڈرون حملے میں ایک شخص شہید ہوا جس میں پناہ گزینوں کے کیمپ کو نشانہ بنایا گیا تھا۔

حماس کے راکٹ حملے، اسرائیل کی فضائی کارروائی، 9فلسطینی شہید

گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران یروشلم اور مغربی کنارے میں اسرائیل کی سیکیورٹی فورسز سے جھڑپوں کے نتیجے میں 700سے زیادہ فلسطینی زخمی ہوچکے ہیں جن میں سے لگ بھگ500 کو مختلف اسپتالوں میں طبی امداد دی گئی۔

Jerusalem violence: Deadly air strikes hit Gaza after rocket attacks - BBC News

اسرائیل کی فوج نے کہا ہےکہ منگل کی صبح غزہ سےفائر ہونے والے راکٹ حملوں میں 6شہری زخمی ہوئے۔

اس سےقبل انتہاپسند یہودیوں نے پیر کو مسجد اقصیٰ میں جشن منانے کا اعلان کیا تھا۔ یہ جشن 1967 کی اسرائیل عرب جنگ میں اسرائیل کی فتح اور یروشلم پر اسرائیل کے قبضے کی خوشی میں منایا جانا تھا۔ انتہاپسند یہودی ہیکل سلیمانی میں جشن منانا چاہتے تھے۔

اسرائیل دہشتگرد ریاست ہے، ترک صدر

فسلطینی نوجوانوں نے انتہاپسند یہودیوں سے مسجد اقصیٰ کو محفوظ رکھنے کے لئے جمعہ کی شب سے ہی مسجد میں قیام کر لیا تھا۔ انتہاپسند یہودیوں کے اعلان کے بعد 90 ہزار فلسطینی مسجد اقصیٰ کی حفاظت کے لئے یروشلم پہنچ گئے تھے۔

اسرائیلی پولیس نے آج صبح فلسطینی مسلمانوں سے مسجد خالی کروانے کے لئے آپریشن شروع کیا۔ مسجد کے مرکزی ہال میں اسرائیلی فوج نے براہ راست فائرنگ کی۔ آنسوگیس کے شیل پھینکے اور فلسطینی نوجوانوں پر ربڑ کی گولیوں سے فائرنگ کی۔ فلسطینی نوجوانوں نے مسجد خالی کرنے سے انکار کر دیا جس کے بعد اسرائیلی فوج نے آج صبح آپریشن شروع کیا۔

مسجداقصیٰ پر اسرائیلی فوج کاحملہ، تقریباً 200 نمازی زخمی

دوسری جانب فلسطینی اتھارٹی کے صدر محمود عباس نے اسرائیل کی کارروائی میں شہریوں کی اموات پر قومی پرچم سرنگوں رکھنے اور عیدالفطر کی مناسبت سے منائی جانے والی تقریبات منسوخ کرنے کا اعلان کیا ہے۔

متعلقہ خبریں