اسلام آباد میں لڑکا اور لڑکی پر تشدد کی ویڈیو، ملزم گرفتار

بدھ 7 جولائی 2021 11:13

مختلف طبقہ فکر کے افراد عثمان مرزا کے ساتھ کمرے میں موجود افراد کی گرفتاری کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ فوٹو فری پکس

پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد میں لڑکا اور لڑکی کو ہراساں کرنے اور ان پر تشدد کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے پر پولیس نے ایک ملزم کو گرفتار کیا ہے۔ 
بدھ کو اسلام آباد کے ڈپٹی کمشنر حمزہ شفاعت نے اس بارے میں ٹوئٹر پر کہا کہ ملزم کی گرفتار کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ملزم کے دیگر ساتھیوں کی گرفتاری بھی عمل میں لائی جا رہی ہے۔
انہوں نے اس کے ساتھ متاثرہ لڑکا اور لڑکی کی ویڈیو حذف کرنے کی بھی درخواست کی۔
With special efforts of @syedmustafapsp and @ICT_Police the culprit is arrested. His accomplices are also being arrested. It is once again requested to please delete the videos which show ID of victims. pic.twitter.com/gnaM8GXTT3
ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک کمرے میں کچھ افراد کے درمیان ایک لڑکا اور لڑکی موجود ہیں اور ایک شخص ان کے ساتھ نازیبا سلوک کر رہا ہے۔
سوشل میڈیا پر جہاں اس واقعے کی مذمت کی جا رہی ہے وہیں سوشل میڈیا میں اس ویڈیو کو متاثرہ لڑکی اور لڑکے کی شناخت کو ظاہر کرنے پر بھی سوال اٹھائے ہیں۔
پاکستان پیپلز پارٹی کی رکن قومی اسمبلی ناز بلوچ نے اس بارے میں کہا ہے کہ خواتین پر تشدد کا واحد حل فوری انصاف ہے۔
‘عثمان مرزا اور ان تمام افراد کو گرفتار کر لینا چاہیے اور ان کو بھی جنہوں نے اس جرم کو دیکھا۔ برائے مہربانی ویڈیو اور تصویر شیئر نہ کریں۔’
صحافی اور اینکر عنیقہ نثار کا کہنا تھا کہ ظلم کرنے والے پر سوالات اٹھانے چاہیے، سہنے والوں پر نہیں۔
ملزم کی گرفتاری کے حوالے سے اسلام آباد پولیس نے اپنے آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ سے کہا کہ ’سوشل میڈیا پر خاتون اور لڑکے پر تشدد کی ویڈیو وائرل ہوئی جس پر اسلام آباد پولیس نے فوراً تمام وسائل بروئے کار لاتے ہوئے ویڈیو میں نظر آنے والے ملزم عثمان مرزا کو چند گھنٹوں میں ہی گرفتار کر لیا اور مقدمہ درج کر کے مزید قانونی کارروائی شروع کردی۔‘