اسلام آباد ہائیکورٹ کا جنرل (ر) اسد درانی کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا حکم

جمعرات 4 مارچ 2021 8:51

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے اسد درانی کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست پر سماعت مکمل کر کے فیصلہ سنایا۔ فائل فوٹو: اے ایف پی

اسلام آباد ہائیکورٹ نے آئی ایس آئی کے سابق سربراہ جنرل ریٹائرڈ اسد درانی کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) سے نکالنے کا حکم دیا ہے۔
جمعرات کو اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے اسد درانی کا نام ای سی ایل سے نکالنے کی درخواست پر سماعت مکمل کر کے فیصلہ سنایا۔
دوران سماعت ڈپٹی اٹارنی جنرل سید طیب شاہ عدالت کے سامنے پیش ہوئے۔
چیف جسٹس نے ڈپٹی اٹارنی جنرل سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ اسد درانی کا نام زیر التوا ہونے کی وجہ سے ای سی ایل میں ڈالا گیا تھا اور اس وقت تمام ریکارڈز کے مطابق ان کے خلاف کوئی انکوائری زیر التوا نہیں نہ کوئی گراؤنڈ ہے۔  
جسٹس اطہرمن اللہ نے مزید کہا کہ ہر عام شہری کی طرح یہ تھری سٹار جنرل ریٹائرڈ ہیں ان کے حقوق ہیں۔
‘اب وہ ایک عام شہری ہے اور آزاد گھومنا انکا حق ہے۔ وفاقی حکومت کے پاس کھلی چھوٹ تو نہیں کہ کسی کو بھی ای سی ایل میں ڈال دے۔’