اسپیس ایکس کا راکٹ گرکر تباہ

فائل فوٹو

امریکا میں اسپیس ایکس کا راکٹ تجرباتی پرواز کے دوران زمین پر گر کر تباہ ہو گیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق اسپیس ایکس کا راکٹ پرواز کے کچھ دیر بعد ہی گر کر تباہ ہوا۔ راکٹ ٹیکساس میں بننے لینڈنگ پیڈ پر آتے ہوئے تباہ ہوا۔ زمین پر گرنے سے قبل راکٹ میں آگ لگ گئی تھی۔

حکام کا کہنا ہے کہ حادثے سے متعلق انکوائری شروع کردی گئی ہے۔ راکٹ حادثے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ کمپنی راکٹ تیار کرکے اسے مریخ پر بھیجنے کا ارادہ بھی رکھتی ہے۔ اسپیس کمپنی کا کہنا ہے کہ اسٹار شپ راکٹ چاند اور مریخ پر انسانی بستیاں بسانے کیلئے مستقبل میں کام آئے گا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق راکٹ کے انجن میں اسٹارٹ ہونے کے بعد ایک سیکنڈ میں کمپیوٹر نظام میں کچھ خرابی نوٹ کی گئی تھی جس پر پرواز ملتوی کردی گئی تھی۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ اس سے پہلے بھی کمپنی کے 2 راکٹ گر کر تباہ ہو چکے ہیں۔ راکٹ 8 منٹ بعد ہی لینڈنگ پیٹ سے علیحدہ ہوکر تباہ ہوا۔

اس سے قبل گزشتہ ماہ فروری میں اسپیس ایکس کمپنی کی طرف سے تیار کیے جانے والا راکٹ کا پروٹو ٹائپ تباہ ہوگیا تھا، جب کہ دسمبر میں بھی اسی کمپنی کا راکٹ تباہ ہوا تھا۔

اسپیس ایکس مستقبل میں خلابازوں کو مریخ پر لے جانے کا بھی اعلان کرچکا ہے۔ اس کمپنی کا ہیڈکواٹرز ہاتھرون میں ہے، جب کہ کمپنی کے سی ای او ایلون مسک ہیں۔

اس سے قبل چیف ایگزیکٹیو آفیسر ایلون مسک نے اعلان کیا تھا کہ وہ 2050 تک 1 ملین لوگوں کو مریخ پر پہنچائیں گے جس کے لیے وہ ایک دن میں 100 لوگوں پر مشتمل 3 پروازیں مریخ روانہ کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

انہوں نے کہا تھا کہ سیارہ مریخ پر 10 لاکھ افراد کو بسانے کی تیاری شروع کردی گئی ہے۔ مریخ پر انٹرنیٹ فراہم کرنے کے لیے سیارے کے گرد سیٹلائیٹ بھی چھوڑا جائے گا۔

متعلقہ خبریں