اعتزاز احسن نے یوسف رضا گیلانی کی جیت کی وجوہات بتادیں

فوٹو: ٹوئٹر

پاکستان پیپلز پارٹی کے سینیئر رہنما چوہدری اعتزاز احسن کا کہنا ہے کہ لیڈر کا کام ہوتا ہے کہ اپنے لوگوں کو اپنے ساتھ ملا کر رکھے بصورت دیگر چھوٹی چھوٹی باتیں بھی ساتھیوں کو متنفر کردیتی ہیں۔

سماء کے پروگرام سات سے آٹھ میں گفتگو کرتے ہوئے اعتزاز احسن نے سینیٹ میں اسلام آباد کی سیٹ پر یوسف رضا گیلانی کی بظاہر غیر متوقع جیت اور حفیظ شیخ کی شکست پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ قومی اسمبلی کے ووٹر کے بڑے نخرے ہوتے ہیں اگر وہ ناراض ہوجائے تو اسے منانا بڑا مشکل ہوتا ہے اس وجہ سے اسے روٹھنے ہی نہیں دینا چاہیے۔

واضح  رہے کہ بدھ کے روز سینیٹ کے انتخابات میں اسلام آباد سے پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کے امیدوار یوسف رضا گیلانی نے حکومتی اتحاد کے حفیظ شیخ کو شکت دے کر بڑا اپ سیٹ کیا ہے۔ یوسف رضا گیلانی کو 169 اور حفیظ شیخ کو 164 ووٹ ملے تاہم اسلام آباد کی دوسری نشست پر تحریک انصاف کی ہی امیدوار فوزیہ ارشد کامیاب قرار پائیں۔ یوسف رضا گیلانی کے متوقع ووٹ 160 تھے تاہم انہیں 9 ووٹ اضافی پڑے جس کا مطلب ہے کہ وہ ووٹ حکومتی ارکان نے انہیں دیے۔ حفیظ شیخ کی درخواست پر دوبارہ گنتی بھی کرائی گئی لیکن یوسف رضا گیلانی دوبارہ کامیاب قرار پائے۔

اعتزاز احسن نے کہا کہ پی ٹی آئی ووٹ کم ہونے کی ایک بڑی وجہ یہ بھی ہوسکتی ہے کہ وزیر اعظم عمران خان اراکین کی وہ چھوٹی چھوٹی سی توقعات پوری نہیں کرسکے۔ انہوں نے کہا کہ اراکین کوئی پیسے نہیں مانگ رہے ہوتے بلکہ وہ تھوڑا سا وقت اور توجہ کے خواہاں ہوتے ہیں جو  عمران خان انہیں نہیں دے سکے۔

انہوں نےکہا کہ آصف علی زرداری کو یہ کریڈٹ ضرور جاتا ہے کہ انہوں نے ایک ایسا  امیدوار چنا جو بہت ملنسار ہے۔ ان کا کہنا تھا یوسف رضا گیلانی جب قومی اسمبلی میں تھے تب وہ شاذ و نادر ہی اسمبلی سے غیر حاضر ریا کرتے تھے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ یوسف رضا گیلانی ایک مقبول وزیر اعظم تھے انہیں غلط نکالا گیا تھا۔

یوسف رضا گیلانی کی جیت میں اسٹیبلشمنٹ کی کے عمل دخل کے امکان کے بارے میں کیے گئے سوال کے جواب میں اعتزاز احسن نے کہا کہ یہ تو پتہ نہیں کہ اسٹیبلشمنٹ درمیان میں آئی یا نہیں کیوں کہ آج کل وہ یہ تاثر دے رہے ہیں کہ وہ معاملات سے پیچھے ہٹے ہوئے ہیں۔

اسٹیبلشمنٹ کے اس تاثر کی وضاحت کرتے ہوئے اعتزاز احسن نے کہا کہ بلاول بھٹو زراداری اور خصوصاً مریم نواز نے اسٹیبلشمنٹ پر کافی دباو ڈالا ہوا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ خاص طور پر مریم نواز تو میدان میں شمشیر بکف نکلی ہوئی ہیں اور وہ کسی معاملے پر یا تو بولتی ہی نہیں یا اگر بولیں تو پھر ان کا موقف بڑا طاقتور اور باہمت ہوتا ہے۔

متعلقہ خبریں