افغانستان اور ایران سے زمینی راستے سے پاکستان آنے پرپابندی

افغانستان اور ایران سے زمینی راستے سے پاکستان آنے پر عارضی پابندی عائد کردی گئی، حکومت نے نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا، اطلاق 5 سے 20 مئی تک ہوگا۔

حکومت نے افغانستان اور ایران سے زمینی راستے سے پاکستان آنے پر عارضی پابندی کا نوٹیفکیشن جاری کردیا۔

نوٹیفکیشن کے مطابق ایران اور افغانستان کو پابندی سے متعلق آگاہ کردیا گیا، پابندی 5 مئی سے 20 مئی تک برقرار رہے گی، 5مئی شام 6 بجے کے بعد افغانستان اور ایران کے مسافروں پر پاکستان میں داخلے پر پابندی ہوگی۔

مزید جانیے: این سی او سی کے عیدالفطر سے متعلق اہم فیصلے

نوٹیفکیشن میں بتایا گیا ہے کہ مسافروں کے پاکستان سے ایران اور افغانستان جانے پر کوئی پابندی نہیں ہوگی، اس دوران ایران اور افغانستان میں موجود پاکستانی شہری واپس آسکیں گے، افغان شہریوں کو انتہائی ضروری طبی امداد کیلئے اجازت دی جائے گی۔

نوٹیفکیشن کے مطابق مسافروں کے کرونا ٹیسٹ کیلئے بارڈر پر طبی عملہ دگنا کیا جائے گا، پابندی کا اطلاق افغان ٹرانزٹ ٹریڈ یا کارگو تجارتی سامان کی گاڑیوں پر نہیں ہوگا۔

تفصیلات پڑھیں: ملک میں ایس اوپیز پرعمل درآمد کی تفصیلات جاری

این سی او سی کے مطابق ملک میں گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کرونا وائرس سے متاثرہ مزید 161 افراد جاں بحق اور 3 ہزار 377 افراد میں وائرس کی تشخیص ہوئی ہے۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے تازہ ترین اعداد و شمار کے مطابق 37 ہزار 587 افراد کے کرونا ٹیسٹ کئے گئے، مثبت کیسز کی شرح 8.98 فیصد رہی، ملک میں وباء سے اب تک مجموعی طور پر 18 ہزار 310 افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔

متعلقہ خبریں