اليکشن کا طريقہ کارپاکستان کی سياسی قيادت طے کرے گی،فواد

آصف زرداری اور نواز شریف پر اوورسیز پاکستانیوں کو اعتماد نہیں تھا

وزیراطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ اليکشن کميشن کی ذمہ داری ہے کہ اگلے انتخابات الیکٹرونک ووٹنگ مشین سے کروائےاور اليکشن کا طريقہ کار پاکستان کی سياسی قيادت طے کرے گی۔

اسلام آباد میں منگل کو وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد صحافیوں سے بات کرتے ہوئے وزیراطلاعات فواد چوہدری نے بتایا کہ وفاقی حکومت کی بہت ساری اراضی پر قبضے ہیں۔ کراچی میں بھی وفاقی حکومت کی اراضی پر قبضہ ہے۔ حکومت ایک قانون لا رہی ہیں جس کے تحت سرکاری افسر کو مقرر کیا جائے گا جو اراضی پر قبضے کئے ہوئے افراد کو نوٹس جاری کرے گا۔ اگر قبضے کرنے والے اپیل کرنے عدالت جائیں گے تو 30 دن کے اندر اس اپیل پر فیصلہ ہوگا۔ اگر قبضہ کرنے والے اس اراضی کو خالی نہیں کریں گے توجتنا وقت لگے گا، قبضہ کرنے والوں کو اس کا کرایہ ادا کرنا ہوگا۔ ایکشن نہ لینے پر متعلقہ ایس ایچ او ذمہ دار ہوگا۔ انھوں نے یہ بھی بتایا کہ کراچی میں کارٹل ہوٹل کی اراضی کی منتقلی کا معاملہ مؤخر کردیا گیا ہے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ الیکٹرونک ووٹنگ مشین بنانے کی پوزيشن ميں ہيں تاہم اليکشن کميشن کو اقدامات کرنے چاہئے۔ ضمنی اليکشن ميں بھی الیکٹرونک ووٹنگ مشین کو استعمال کيا جانا چاہيے اور یہ اليکشن کميشن کی ذمہ داری ہےکہ اگلے اليکشن اس مشین سےکروائے ۔ فواد چوہدری نے مزید کہا کہ اليکشن کا طريقہ کار پاکستان کی سياسی قيادت طے کرے گی اور الیکٹرانک ووٹنگ مشین کے حوالے سے الیکشن کمیشن عملی اقدامات کرے۔ اس وقت یہ مشینیں 20ممالک ميں سب سے زيادہ ايڈوانس ہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ آصف زرداری اور نواز شریف پر اوورسیز پاکستانیوں کو اعتماد نہیں تھا۔ ان کو ڈر تھا کہ ان کی امانت میں خیانت ہوگی۔

اس حوالے سے وزیراطلاعات نے یہ بھی بتایا کہ تحریک انصاف نے ہمیشہ سمندر پار پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دینے کی حمایت کی اورملک کی معیشت کی بہتری میں سمندر پار پاکستانیوں کا اہم کردار ہے کیوں کہ کثیر تعداد میں ترسیلاتِ زر پاکستان میں آئی ہیں۔ سمندر پار پاکستانیوں کی جانب سے ایک ہزار ارب روپے ملک میں آناوزیراعظم پر اعتماد کا مظہر ہے۔

وزیراطلاعات نے کہا کہ کابینہ نے اقتصادی رابطہ کمیٹی کے فيصلوں کی توثیق کردی ہے اور 10لاکھ ٹن گندم درآمد کرنے کی منظوری دے دی ہے۔

کابینہ کےدیگر فیصلوں سے متعلق وزیراطلاعات نے بتایا کہ اسلم خان پی آئی اے کےنئے چیئرمین مقررکردئیے گئے ہیں۔ ممنوعہ اسلحہ کے لائسنس کا معاملہ مؤخر کردیا گیا ہے۔ کابینہ کے اقدامات سے اسلامی بینکنگ کو فروغ ملے گا۔ انھوں نے بتایا کہ لکسمبرگ کے ساتھ معاہدے کے تحت پاکستانی نژاد شہری دوہری شہریت رکھ سکتے ہیں۔

فواد چوہدری نے بتایا کہ پینے کا پانی زیرزمین بہت نیچے جارہا ہے۔ ہاؤسنگ سوسائٹیز کو زیر زمین پانی کے استعمال کی اجازت دینا صحیح نہیں ہوگا۔وزیراعظم نے ماحولیات مسائل پر قابو پانے کے لیے زور دیا ہے۔

کرونا وائرس کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ ملک میں 4لاکھ افراد کو روزانہ کی بنیاد پر ویکسین لگوا رہے ہیں۔اس وقت دنیا کرونا وباء سے نبرد آزما ہونے کی پاکستان کی  کاوشوں کی معترف ہے۔

متعلقہ خبریں