امریکا سے متعلق عمران خان کےبیانات ملکی مفاد میں نہیں، انیلہ علی

پاکستانی نژاد امریکی سیاستدان انیلہ علی کا کہنا ہے کہ پاکستان اور امریکا اب بھی اتحادی ہیں لیکن عمران خان سیاسی فائدے کے لیے بیانات دے دیتے ہیں پاکستان کے مفاد میں نہیں۔
سماء کے پروگرام آواز میں گفتگو کرتے ہوئے امریکی ڈیموکریٹ سیاستدان کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم کے ایسے بیانات سے ان لوگوں کے لیے مشکل پیدا کردیتے ہیں جو دونوں ممالک کے درمیان بہتر تعلقات کے لیے کوشاں ہیں۔
انیلہ علی نے کہا کہ امریکی صدر کو احساس ہے کہ اس جنگ میں بے شمار بے گناہ لوگوں کی جانیں چلی گئی ہیں اور ان کے دل میں پاکستان کے لیے اہمیت موجود ہے۔
ان کا کہنا تھا کہ افغان نیشنل آرمی طالبان سے ہار رہی ہے جو فکر کی بات ہے کیوں کہ انتہاپسندی سے ہم سب متاثر ہورہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ افغان طالبان کہہ چکے ہیں کہ امریکی افواج کی موجودگی تک ہم لڑتے رہیں گے اس لیے اتحادی افواج کو وہاں سے نکالا جارہا ہے۔
انیلہ علی کا کہنا تھا پاکستان اور امریکا کے بہتر تعلقات دونوں ملکوں کے مفاد میں ہے اگر پاکستانیوں کو محفوظ رکھنا ہے تو القائدہ اور داعش جیسی تنظیموں پر نظر رکھنی ضروری ہے۔
انہوں نے کہا کہ ترک صدر امریکا اور پاکستان دونوں کے ساتھ اچھے تعلقات رکھنا چاہتے ہیں اور اس وقت دنیا میں کوئی ایسا ملک نہیں ہے جو امریکا سے بہتر تعلقات نہیں رکھنا چاہتا۔
انیلہ علی کا کہنا تھا کہ افغانستان میں دہشت گرد حملوں میں بچے مررہے ہیں کل کو یہ پاکستان کو بھی نقصان پہنچا سکتے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ کام کرنا امریکا کے مفاد میں ہے اور ہم یہ بھی چاہتے ہیں کہ تعلیم اور صحت کی مد میں پاکستانی امداد دوبارہ شروع کی جائے۔

متعلقہ خبریں