امریکا کی کرونا ویکسین کاپی رائٹ کےخاتمےکی حمایت

کسی بھی ملک ميں بنائی جاسکےگی اورکم قیمت میں دستیاب ہوگی

امریکا نے ویکسین کے پیٹنٹ ختم کرنے کی حمایت کا اعلان کردیا ہے۔ کرونا سے بچاؤ کی ويکسين کسی بھی ملک ميں بنائی جاسکے گی اور کم قیمت میں دستیاب ہوگی۔

امریکا نے کرونا وائرس کے لیے تیار کی جانے والی ویکسین کے پیٹنٹ ختم کرنے کی حمایت کا اعلان کردیا ہے۔

ڈبليو ٹی او ميں امریکی نمائندہ کیتھرین تائی کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس عالمی بحران ہے اور غیرمعمولی حالات اور غیر معمولی اقدامات کا تقاضا کرتے ہيں۔

جوبائیڈن انتظامیہ کی جانب سے جاری اعلاميے کے بعد غریب ملکوں کو بھی امید ہوچلی ہے کہ وہ بھی ويکسين بنا سکيں گےاور اُن کے شہريوں کو بھی سستی ويکسين مل سکے گی۔

گذشتہ ہفتے دنیا کے متعدد سربراہوں نے امریکی صدر بائیڈن کو خط لکھ کر مطالبہ کیا تھا کہ کرونا ویکسین پیٹنٹ کے قوانین ختم کردیے جائیں تاکہ کم آمدنی والے ملکوں کو فائدہ ہو۔ اس خط پر ملالہ یوسف زئی سمیت 99 نوبل انعام یافتگان کے دستخط تھے۔

دوسری جانب مائيکرو سافٹ کے بانی بل گيٹس اس مہم کی سخت مخالفت کررہے ہيں اور اُن کا کہنا ہے کہ ویکسین کے پیٹنٹ ختم کرنا مناسب نہیں ہوگا۔

متعلقہ خبریں