انڈونیشیا میں کورونا کا زور، ایک مہینے میں 30 ڈاکٹرز ہلاک

انڈونیشیا میں کورونا وائرس کے بڑھتے کیسز کی وجہ سے تقریباً ایک مہینے میں 30 ڈاکٹرز ہلاک ہوئے ہیں۔
مئی میں عید الفطر کے موقعے پر قواعدوضوابط کی خلاف ورزی کے بعد محکمہ صحت کے حکام نے کورونا وائرس کے کیسز میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا تھا۔
عرب نیوز کے مطابق وبا کے آغاز سے لے کر اب تک انڈونیشیا میں کورونا وائرس سے 57 ہزار 561 افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ پیر کو اس وبا سے مزید 423  افراد ہلاک ہوئے ہیں۔
مزید پڑھیں
کورونا وائرس سے انڈونیشیا میں چار سو پانچ ڈاکٹرز اور سینکڑوں ہیلتھ کیئر ورکرز ہلاک ہوئے۔
کیسز میں اضافے کی وجہ سے ہسپتالوں اور کمیونٹی ہیلتھ سینٹرز پر مریضوں کا بوجھ بھی بڑھتا جا رہا ہے۔
انڈونیشیا کے میڈیکل ڈاکٹرز ایسوسی ایشن (آئی ڈی آئی) کے سربراہ ڈاکٹر ادیب خمیدی نے اتوار کو صحافیوں کو بتایا تھا کہ ’کورونا وائرس کی وجہ سے چار مزید ڈاکٹرز انتقال کر گئے ہیں۔ اس سے جون میں وبا سے ہلاک ہونے والے ڈاکٹروں کی تعداد 30 ہوگئی ہے۔‘
انہوں نے مزید بتایا کہ انڈونیشیا کے سب سے زیادہ آبادی والے جزیرے جاوا میں کورونا وائرس کے کیسز میں اضافہ ہوا ہے اور ملک کے دیگر حصوں سے کیسز میں اضافے کی رپورٹس وصول ہو رہی ہیں۔


انڈونیشیا میں ہسپتال میں داخل ہونے سے پہلے مریضوں کا کورونا وائرس کا ٹیسٹ کیا جا رہا ہے۔ (فوٹو: اے ایف پی)

انہوں نے مزید بتایا کہ مرکزی جاوا کے قدوس ریجنسی میں 853 ڈاکٹر اس بیماری سے متاثر ہوئے تھے۔ جن میں سے 231 کا علاج ہوا جبکہ مشرقی جاوا میں کورونا وائرس سے متاثرہ پانچ کی حالت تشویشناک تھی۔
مشرقی جاوا میں ایئرلانگا یونیورسٹی کے نرسنگ کے پروفیسر نورسلام کے مطابق صوبے میں کم از کم 277 طبی عملے کے ارکان کورونا وائرس سے ہلاک ہوئے ہیں۔
نورسلام نے بتایا کہ ’تقریباً سب کی ویکسینیشن ہو چکی تھی لیکن پھر بھی ان کو اس بیماری سے خطرہ لاحق ہو گیا تھا۔‘

انڈونیشیا کے سب سے زیادہ آبادی والے جزیرے جاوا میں کورونا وائرس کے کیسز میں اضافہ ہوا ہے۔ (فوٹو: اے ایف پی)
سرکاری اعدادوشمار کے مطابق 21 جون تک 14لاکھ پانچ ہزار 320 طبی عملے کے ارکان کی ویکسینیشن ہو چکی ہے۔
انڈونیشیا کے میڈیکل ڈاکٹرز ایسوسی ایشن (آئی ڈی آئی) کے سربراہ ڈاکٹر ادیب خمیدی نے مزید کہا کہ کورونا وائرس سے نمٹنے کے لیے حکومت کو سخت اقدامات اٹھانا ہوں گے۔