انڈیا میں کورونا وائرس کے بعد زیکا وائرس سامنے آگیا، الرٹ جاری

انڈیا کی جنوبی ریاست کیرالہ میں زیکا وائرس کے 14 کیسز سامنے آنے کے بعد حکام نے ریاستی سطح پر الرٹ جاری کر دیا ہے۔
فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق متاثرہ افراد میں سے ایک 24 سالہ حاملہ خاتون بھی ہیں جن کا صوبائی دارالحکومت کے ہسپتال میں علاج جاری ہے۔
حاملہ خواتین کو زیکا وائرس سے خاص طور پر خطرہ ہے جو نوزائیدہ بچے میں منتقل ہو سکتا ہے۔ مچھر سے پیدا ہونے والے اس وائرس سے جسم میں تاعمر ساتھ رہنے والی بیماریاں پیدا ہوجاتی ہیں جن میں سے ایک گلیان بیری سنڈروم ہے جس میں انسان کا مدافعتی نظام اعصاب پر حملہ کرنا شروع ہو جاتا ہے۔
کیرالہ کی وزیر صحت وینا جورج نے اے ایف پی کو بتایا کہ ’حاملہ خاتون کے وائرس سے متاثر ہونے کے بعد کل کیسز کی تعداد 14 ہو گئی ہے۔‘
مزید پڑھیں
وزیر کا کہنا تھا کہ ’وائرس سے متاثر ہونے والے تمام افراد ہیلتھ کیئر ورکرز ہیں، مریضوں کا علاج جاری ہے تاہم ان کی حالت مستحکم ہے۔‘
امراض کے بچاؤ اور قابو پانے والے امریکی ادارے کے مطابق ’زیکا وائرس عموماً ایڈیس مچھر کے کاٹنے سے پھیلتا ہے، لیکن جنسی طور پر بھی منتقل ہو سکتا ہے۔‘
زیکا وائرس کا پہلا کیس سنہ 1947 میں افریقی ملک یوگنڈا کے جنگلوں میں رہنے والے بندروں میں دریافت ہوا تھا۔ گذشتہ دہائیوں میں دنیا بھر کے کئی ممالک میں زیکا وائرس پھیلنے کے کئی واقعات سامنے آئے ہیں۔
زیکا وائرس سے بچاؤ یا علاج کے لیے کوئی ویکسین یا دوا دستیاب نہیں ہے۔
زیکا وائرس کی علامات میں بخار، جلد پر سرخی مائل دانے، آشوب چشم اور پٹھوں یا جوڑوں کا درد شامل ہے، تاہم اس وائرس سے ہونے والی اموات کی تعداد بہت کم ہے۔

مچھروں کی افزائش روکنے کے لیے متاثرہ علاقوں میں سپرے کیا جا رہا ہے (فوٹو: اے ایف پی)
انڈین حکام کے مطابق ’وائرس سے متاثرہ حاملہ خاتون کو ہسپتال میں داخل ہونے سے پہلے زکام، سر کا درد اور جلد پر دانوں کی شکایات کا سامنا تھا تاہم بدھ کے روز بغیر کسی پیچیدگی کے بچے کی پیدائش ہوئی۔‘
ریاست کیرالا کی وزیر صحت کا کہنا ہے کہ ’نوزائیدہ بچے میں وائرس کا ٹیسٹ منفی آیا ہے۔‘
وائرس کے کیسز میں ممکنہ اضافے کے حوالے سے محکمہ صحت کے حکام علاقے کا جائزہ لے رہے ہیں جبکہ مچھروں کی افزائش کو روکنے کے لیے متعلقہ ٹیمیں سپرے بھی کر رہی ہیں۔
انڈیا میں سنہ 2017 اور 2018 میں بھی زیکا وائرس پھیلا تھا جب مغربی ریاست گجرات اور راجستھان کے علاوہ مرکزی ریاست مدھیہ پردیش میں سینکڑوں افراد متاثر ہوئے تھے۔
ریاست کیرالہ میں پہلی مرتبہ زیکا وائرس کے کیسز سامنے آئے ہیں جبکہ حکام کے لیے پہلے ہی کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز پر قابو پانا ایک چیلنج ہے۔ جمعے کے روز کورونا وائرس کے 13 ہزار سے زائد کیسز ریکارڈ کیے گئے تھے۔