انڈین جیولن تھروور شیوپال سنگھ کا ڈوپ ٹیسٹ مثبت، پابندی عائد

شیوپال سنگھ پر اکتوبر 2025 تک کے لیے پابندی عائد کر دی ہے۔ فوٹو: اے ایف پی

ٹوکیو اولمپک کے دوران جیولن تھرو کے مقابلوں میں حصہ لینے والے انڈین ایتھلیٹ شیوپال سنگھ کا ممنوعہ ادویات کا ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد چار سال کے لیے انہیں کھیلوں میں حصہ لینے سے روک دیا گیا ہے۔ 
خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق شیوپال سنگھ کے ڈرگ ٹیسٹ میں میتھاڈون نامی ممنوعہ سٹیرائڈ کے اثرات کا انکشاف ہوا ہے جو دراصل پرفارمنس کو بہتر کرنے کے لیے کھلاڑی استعمال کرتے ہیں۔
انڈیا کی اینٹی ڈوپنگ ایجنسی نے 27 سالہ ایتھلیٹ پر اکتوبر 2025 تک کے لیے مقابلوں میں حصہ لینے کی پابندی عائد کر دی ہے۔
مزید پڑھیں
 ٹوکیو اولمپک مقابلوں میں سونے کا تمغہ جیتنے والے نیرج چوپڑا کے بعد شیوپال سنگھ جیولن تھرو میں انڈیا کے دوسرے بڑے ایتھلیٹ ہیں۔
گزشتہ سال ستمبر میں بھی شوپال سنگھ پر مقابلوں میں حصہ لینے پر پابندی عائد کی گئی تھی۔
سال 2019 میں دوحہ میں منعقد ہونے والے ایشیئن چیمپیئن شپس کے مقابلوں میں شوپال سنگھ نے جیولن 86.23 میٹر دور پھینک کر چاندی کا تمغہ جیتا تھا۔
اس سے قبل رواں سال میں ہی ایک اور انڈین ایتھلیٹ کمل پریت کا ڈرگ ٹیسٹ مثبت آنے پر انہیں معطل کر دیا گیا تھا۔
کمل پریت نے بھی  ٹوکیو اولمپک میں جیولن تھرو کے مقابلوں میں حصہ لیا تھا۔
عالمی انیٹی ڈوپنگ ایجنسی کی گزشتہ سال جاری ہونے والی رپورٹ کے مطابق روس اور اٹلی کے بعد ممنوعہ ادویات کے استعمال پر پابندی کی خلاف ورزی کرنے والوں میں انڈیا تیسرے نمبر پر ہے۔