اوورسیز پاکستانی کی شکایت، وزیراعظم کی ہدایت پر افسران معطل

بیرون ملک مقیم پاکستانی کی متعدد بار شکایات درج کرانے کے باوجود مسئلہ حل نہ کرنے پر وزیراعظم عمران خان نے متعدد افسران کو عہدوں سے برطرف اور معطل کر دیا ہے۔ 
سنیچر کو وزیراعظم آفس سے جاری ہونے والے اعلامیے کے مطابق بیرون ملک مقیم پاکستانی کی سٹیزن پورٹل پر شکایات کا وزیراعظم عمران خان نے نوٹس لیتے ہوئے اسلام آباد لینڈ ریونیو کے افسران کے خلاف کارروائی کی ہدایت کی ہے۔  
وزیراعظم کی ہدایات پر متعدد افسران کو عہدوں سے برطرف کر کے انکوائری کا آغاز کر دیا گیا ہے جبکہ 21 روز میں انکوائری رپورٹ جمع کروانے کی ہدایت کی گئی ہے۔  
مزید پڑھیں
اعلامیے کے مطابق ڈپٹی رجسڑار کوآپریٹو سوسائیٹز اسلام آباد کو فوری طور پر عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے جبکہ وزارت داخلہ نے سرکل رجسٹرار کو معطل کر دیا ہے۔ اس کے علاوہ انسپکٹر کوآپریٹیو سوسائیٹیز اور متعلقہ کلرک کو بھی عہدے سے برطرف کر دیا گیا ہے جبکہ متعلقہ ہاؤسنگ سوسائیٹریز کو شوکاز نوٹس جاری کرتے ہوئے بینک اکاونٹس منجمند کرنے کی ہدایات جاری کر دی ہیں۔  

شہری نے کیا شکایت درج کی تھی؟  

وزیراعظم ڈیلیوری یونٹ کے حکام نے اردو نیوز کو بتایا کہ ’بیرون ملک مقیم ایک شہری نے آٹھ سال قبل اسلام آباد کی جناح گارڈن نامی سوسائٹی میں ایک پلاٹ خریدا تھا لیکن ہاؤسنگ سوسائٹی کی جانب سے شہری کو قبضہ نہیں دیا جارہا تھا۔‘  

وزیراعظم عمران خان کی ہدایات پر متعدد افسران کو عہدوں سے برطرف کر کے انکوائری کا آغاز کر دیا گیا ہے۔ (فوٹو: روئٹرز)
حکام کے مطابق شہری نے ڈیڑھ سال کے عرصے میں وزیراعظم سٹیزن پورٹل پر 11 بار شکایات درج کرائیں جو کہ اسلام آباد سرکل رجسٹرار کو بھجوائی گئیں لیکن اس پر کوئی ایکشن نہیں لیا گیا۔ 
حکام کے مطابق ’شہری کی جانب سے 11 شکایات درج کروانے کے باوجود سرکل رجسٹرار نے شہری کی رہنمائی نہیں کی  بلکہ ہر بار معمول کی کارروائی کرتے ہوئے ہاوسنگ سوسائٹی کو شکایات حل کے لیے بھجواتا رہا اور سٹیزن پورٹل پر مسئلہ حل قرار دیا جاتا جو کہ وزیراعظم سٹیزن پورٹل کی ہدایات کے برعکس ہے۔‘
حکام نے بتایا کہ وزیراعظم آفس نے رجسٹرار کوآپریٹویوز سے 24 گھنٹوں میں تمام کوآپریٹو ہاوسنگ سوسائیٹیز سے متعلق شکایات کے ازالے اور طریقہ کار کی تفصیلی رپورٹ طلب کر لی ہیں جبکہ اسلام آباد سرکل کے حوالے سے سٹیزن پورٹل پر کی گئی اس قسم کی تمام شکایات کو دوبارہ کھول دیا گیا ہے اور نئی تعینات ہونے والی ڈپٹی رجسٹرار کو ہر شکایات دوبارہ دیکھنے کی ہدایت کی گئی ہے۔  
حکام کے مطابق وزیراعظم ڈیلوری یونٹ کی ابتدائی تحقیقات کے بعد چیف کمشنر اسلام آباد کو ہدایات جاری کی گئی ہیں معاملے کی شفاف تحقیقات کر کے رپورٹ 21 روز میں وزیراعظم آفس ارسال کی جائے۔