’آئی آف فائر‘، میکسیکو کے سمندر میں آگ کیسے لگ گئی؟

ہفتہ 3 جولائی 2021 10:06

جمعے کی صبح پانی میں لگنے والی آگ کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہیں (فوٹو: سکرین گریب)

خلیج میکسیکو کے سمندر میں اچانک آگ بھڑک اٹھی، اور لوگ پانی میں سے لپکتے شعلوں کو دیکھ کر حیران رہ گئے۔ جبکہ کچھ لوگوں نے اس کی ویڈیوز بنا لیں جو اس وقت سوشل میڈیا پر وائرل ہیں۔
خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق جزیرہ نما یوکاٹن میں جمعے کی صبح لگنے والی آگے کے حوالے سے آئل کمپنی پیمیکس کا کہنا ہے کہ پانی کے نیچے سے گزرتی گیس پائپ لائن میں لیکج کی وجہ سے آگ لگی۔
مزید پڑھیں
سوشل میڈیا پر وائرل ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ شعلے پانی کے اندر سے باہر نکل رہے ہیں اور آتش فشاں کے لاوا سے مشابہہ لگ رہے ہیں جس کو سوشل میڈیا صارفین ’آئی آف فائر‘ کہہ رہے ہیں۔ یہ آگ آئل پلیٹ فارم پیمیکس کے قریب لگی ہے۔
پیمیکس کی جانب سے کہا گیا ہے کہ آگ پانچ گھنٹے سے زائد تک لگی رہی۔
آئل کمپنی کے ذرائع نے روئٹرز کو بتایا کہ آئل پلیٹ فارم کے لیے گیس کی پائپ لائن پانی کے اندر سے گزاری گئی ہے جو پلیٹ فارم کو  کُو مالوب زاپ سے جوڑتی ہے۔
کُو مالوب زاپ میکسیکو کی خلیج کے جنوری کنارے کے قریب واقع ہے۔
پیمیکس کے مطابق آگ لگنے کے واقعے میں کسی کے زخمی ہونے کی اطلاع نہیں ہے جبکہ پروڈکشن کے کام پر بھی کوئی فرق نہیں پڑا۔
کمپنی کا کہنا ہے کہ مقامی وقت کے مطابق صبح پانچ بج کر 15 منٹ پر آگ لگی جس کو صبح ساڑھے 10 بجے کے قریب مکمل طور پر بجھا دیا گیا۔
کمپنی کی جانب سے یہ بھی کہا گیا ہے کہ واقعے کی تحقیقات بھی کی جائیں گی۔

آگ تقریباً پانچ گھنٹے تک جلتی رہی (فوٹو: سکرین گریب)
پیمیکس کمپنی جو پہلے بھی ایسے واقعات کا ریکارڈ رکھتی ہے، کی جانب سے یہ بھی کہا گیا کہ اس نے 12 انچ کے ڈایامیٹر والوز کو بند کر دیا ہے۔
میکسیکوز آئل سیفٹی کے سربراہ اینجل کیریزیلز نے ٹوئٹر پر لکھا ’آگ زیادہ پھیلی نہیں‘ تاہم انہوں نے یہ وضاحت نہیں کی کہ پانی کی سطح پر کیا چیز جل رہی تھی۔
 کُو مالوب زاپ پیمیکس کا خام تیل کا سب سے بڑا یونٹ ہے جو 40 فیصد سے زیادہ تقریباً ایک 17 لاکھ بیرل پیداوار دیتا ہے۔