آرمینیائی فوج نے وزیراعظم سے استعفیٰ مانگ لیا

فوٹو: ٹوئٹر

آرمینیا میں فوج اور حکومت ایک دوسرے کے آمنے سامنے آگئیں، فوج نے وزیراعظم سے استفعیٰ کا مطالبہ کردیا۔

رائٹرز کی رپورٹ کے مطابق آرمینیا کی مسلح افواج نے وزیراعظم نکول پشینان اور ان کی حکومت سے استعفی دینے کا مطالبہ کیا ہے، وزیراعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبے کی بڑی وجہ ناگورنو کاراباخ میں آزربائیجان کے ہاتھوں شکست ہے۔

نگورنو کاراباخ کا اہم ضلع 30سال بعد آذربائیجان کے حوالے

فوج نے رمینیائی حکومت پر کا الزام عائد کیا ہےکہ انھوں نے انہوں نے ملکی سالمیت کے معاملے پر ٹھوس موقف نہیں اپنایا۔

دوسری جانب وزیراعظم آرمینیا نے اپنے بیان میں کہا کہ آرمینیا میں فوجی بغاوت کی کوشش مسترد کرتے ہیں، فوج سے کشیدہ حالات کے باعث آرمینیا کے وزیراعظم نے چیف آف جنرل اسٹاف کونکال دیا ہے۔

آرمینیا نےمکمل جنگ بندی معاہدے پر دستخط کردیے

اس سے قبل گزشتہ سال کے نومبر میں آذربائیجان سے شکست اور امن معاہدے پر آرمینیائی وزیراعظم کے دستخط کے بعد ملک بھر میں احتجاج مظاہرین نے وزیراعظم کے استعفے کا مطالبہ کیا تھا۔

آزربائیجان سے معاہدے سے علیحدگی پسند ناگورنوکاراباخ کے خلاف چھ ہفتوں کے خونی تنازع کا خاتمہ ہوا، لڑائی کے دوران 4،700 سے زیادہ افراد مارے گئے تھے۔

آرمینیاکی شکست، ویزاعظم سےاستعفیٰ کامطالبہ

واضح رہے کہ آذربائیجان کے علاقے شوشا میں آرمینیا نے 1992 میں قبضہ کرلیا تھا اور مسلمانوں کو بے دخل کردیا تھا۔

متعلقہ خبریں