آزاد کشمیر میں ریفرنڈم کرانے جا رہے ہیں،عمران خان

آزاد کشمیر کو صوبہ نہیں بنا رہے

Your browser does not support the video tag.

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ آزاد کشمیر کے عوام کو اپنی مرضی سے جینے کا حق ہے، یہ آپ لوگوں نے فیصلہ کرنا ہے کہ آپ کو بھارت کیساتھ نہیں رہنا۔ آپ لوگ ریفرنڈم سے فیصلہ کریں کہ پاکستان کے ساتھ رہنا ہے یا آزاد؟۔ حکومت کیخلاف پروپگنڈا کیا جا رہے کہ میں آزاد کشمیر کو صوبہ بنانا چاہتا ہوں۔

آزاد کشمیر کے علاقے تراڑ کھیل میں جلسے سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ کہا جا رہا ہے کہ آزاد کشمیر کو صوبہ بنانا چاہتا ہوں۔ یہ بات کہاں سے آئی مجھے بھی اس کا علم نہیں۔ ابھی سے ہی الیکشن میں دھاندلی کا شور مچایا جا رہا ہے۔ مسلم لیگ ن نے آج تک کوئی کام ایمانداری سے نہیں کیا۔

وزیراعظم نام لیے بغیر سوال کیا کہ الیکشن کمیشن اور عملہ ن لیگی حکومت کا اور دھاندلی ہم کرینگے؟ یہ کیسے ممکن ہے۔ نواز شریف اپنے امپائر کے ساتھ میچ کھیلنے آیا کرتا تھا۔ نواز شریف کی جیسی سیاست تھی ویسی ہی کرکٹ کھیلتا تھا۔ ان کیلئے وہ کرکٹ اچھی تھی جس میں ان کے امپائر ان کے ساتھ ہوں۔

انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کو ایک سال سے کہہ رہے ہیں کہ الیکشن اصلاحات کریں۔ الیکشن اصلاحات کیلئے اپوزیشن ایک قدم بھی آگے نہیں بڑھتی۔ نواز شریف نے مودی سے خفیہ میٹنگ بھی کی۔ مودی ظلم و ستم کر رہا ہے اور یہ اسے شادیوں پر بلاتے تھے۔

سابق صدر زرداری سے متعلق وزیراعظم نے کہا کہ زرداری کو پیسے گننے سے وقت ملتا تو وہ کشمیر کی بات کرتا۔ عوام مخالفین سے پوچھیں کہ انہوں نے کشمیر کیلئے کیا کام کیا؟۔

عمران خان کا یہ بھی کہنا تھا کہ عالمی دنیا نے کشمیریوں کو اپنا فیصلہ کرنے کا حق دیا تھا۔ میں آئندہ بھی پوری دنیا میں کشمیریوں کی آواز اٹھاتا رہوں گا۔ آزادی کیلئے قربانیاں دینے والوں کو ان کا حق ملنا چاہیے۔

متعلقہ خبریں