آصف زرداری کے جعلی اکاؤنٹس کیس میں نیب 33 ارب روپے وصول کر چکا، فواد چودھری کا دعویٰ

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے دعویٰ کیا ہے کہ سابق صدر آصف علی زرداری کے جعلی اکاؤنٹس کیس میں اب تک 33 ارب روپے وصول ہو چکے ہیں۔
ٹوئٹر پر جاری اپنے ایک بیان میں وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ ‏آصف زرداری جعلی اکاؤنٹس کیس میں قومی احتساب بیورو (نیب) اب تک 33 ارب روپے وصول کر چکا ہے۔
فواد چودھری نے کہا کہ ’وصول کی گئی رقم تقریباً 20کروڑ ڈالر بنتی ہے، لیکن اصل مقدمہ 5000 ارب روپے کے لگ بھگ ہے فواد چوہدری کا کہنا تھا وصولی سے اندازہ لگالیں کہ ملک میں کرپشن کی کیا سطح رہی ہے اور حکمرانوں نے سندھ اور پاکستان کو کیسے لوٹا ہے۔‘
 
مزید پڑھیں

فواد چودھری کے بیان پر سوشل میڈیا صارفین تبصرہ کر رہے ہیں۔

سلطان خان یوسفزئی نامی صارف نے سوال اٹھایا کہ ‘زرداری صاحب کے پانچ سال میں پاکستان کی کل محصولات 4500 ارب روپے تھیں ، اگر مان لیا جائے کہ زرداری نے خزانے کے سارے پیسے اپنے جیب میں ڈالے باقی پورا پاکستان مفت میں چلتا رہا، لیکن 5000 ارب کی کریشن کہاں سے کیا۔‘
انجینئر ظہیر احمد مغل نے لکھا کہ ’33  ارب ریکور کرنے کے باوجود زرداری کو سزا نہیں سنائی گئی۔‘
سمرین یوسفزئی نے لکھا کہ ’اگر اتنے پیسے ريكور ہو گئے ہیں تو مہنگائی گیس و بجلی کی لوڈ شیڈنگ  سمجھ نہیں آرہی
یا پھر آپ بھی نونگیاں مار رہے ہیں۔‘
عبدلجبار ناصر نامی صارف نے پوچھا ’محترم وزیر صاحب!! ذرا اس کی تفصیل بتائیں گے؟ کس کس مد اور کہاں کہاں سے وصولیاں ہوئی ہیں؟
اصعر حیات نے لکھا ’اصل بات یہ ہے کہ نیب جب اعلی عدالتوں میں جاتا ہے تو یہ کرپشن ثابت کرنا مشکل جس کی وجہ سے تمام لوگ ضمانت پر رہا یا بری ہوجاتے ہیں۔