اٹھارہ وفاقی محکموں کے ملازمین کی تنخواہيں نہيں بڑھيں گی

وزارت خزانہ نےوفاقی کابینہ سے منظوری کیلئے سمری تیار کرلی

وفاقی سرکاری ملازمین میں 100 فیصد اضافی الاؤنسز لینے والے 18 وفاقی محکموں کے ملازمين کی تنخواہيں نہيں بڑھائی جائیں گی۔

وزارت خزانہ کی دستاویز کے مطابق 18 وفاقی محکموں میں ایوان صدر، پی ایم سیکرٹریٹ، سینیٹ، قومی اسمبلی، ایف آئی اے، ایف بی آر، نیب، اعلیٰ عدلیہ، موٹر وے و ٹریفک پولیس، پارلیمانی امور ڈویژن اور دیگر محکمے شامل ہیں۔

ریلیف صرف بنیادی تنخواہ کے برابر اضافی تنخواہ یا پرفارمنس الاؤنس نہ لینے والوں کے لیے ہے۔

سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے کا نوٹیفکیشن جاری

دستاویز کے مطابق 1972 میں یکساں پے اسکیل متعارف کرائے گئے تاہم 2009 سے بعض محکموں کے ملازمین کو اضافی الاؤنسز دیے گئے۔ فیصلے سے مختلف محکموں کے ملازمین کی بنیادی تنخواہوں میں تفریق پیدا ہوئی۔

گریڈ19 تک کے 6 لاکھ 23 ہزار 215 میں سے 2 لاکھ 96 ہزار 470 ملازمین کو کبھی 100 فیصد اضافی الاؤنس نہیں ملا۔ ایسے ملازمین کو یکم مارچ سے 25 فیصد ایڈہاک الاؤنس دینے کی حتمی منظوری وزیراعظم کی زیر صدارت وفاقی کابینہ اجلاس میں دی جائے گی اور یکم جولائی سے الاؤنس بنیادی تنخواہ میں ضم کر دیا جائے گا۔

وزارت خزانہ نے اس متعلق سمری تیار کرلی ہے جس کی منظوری وفاقی کابینہ سے لی جائے گی۔

متعلقہ خبریں