اگرعوام کی جیب خالی ہےتوبجٹ کےاعداد وشمارجعلی ہیں،شہبازشریف

غریب آدمی مفلسی اور غربت میں جھلس گئے ہیں

 

شہبازشریف نے کہا ہے کہ اگر عوام کی جیب خالی ہے تو بجٹ کے اعداد وشمار جعلی ہیں۔

پیر کو قومی اسمبلی میں وفاقی بجٹ پر خطاب کرتے ہوئے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے کہا کہ کاش دن رات ریاست مدینہ کا ذکر کرنے والے اور مثالیں دینے والے حکمران غربت کی لکیر سے نیچے بسنے والے پاکستانیوں کی مدد کے لیے ان کے ہاتھ تھام لیتے۔

انھوں نے کہا کہ کاش اس وقت حکمران ملک میں موجود یتیم،بیوہ اور مظلوموں کا ہاتھ تھام لیتے اور ان کی دعائیں لیتے،لیکن ایسا نہیں ہوا اور اگر حکومت کے بقول یہ بجٹ معاشی ترقی کا بجٹ ہے تو وہ ترقی کس کی ہے۔

شہبازشریف کا یہ بھی کہنا تھا کہ غریب آدمی مفلسی اور غربت میں جھلس گئے ہیں اور ان کو ایک وقت کی روٹی نصیب نہیں ہے۔ اس بجٹ میں معاشی ترقی کا ڈھنڈھوراپیٹا جارہا ہے اور خوش آمدیوں کو نوازا جارہا ہے۔بجٹ میں غریبوں کو ریلیف نہیں دیا گیاہے۔

اس وقت حکومتی بینچوں کی جانب سے شدید شور شرابا کیا گیا۔ اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصرنے شہبازشریف کو تقریرکرنےسےروک دیا اوراپوزیشن اورحکومتی رکن قومی اسمبلی کو ہدایت کی کہ ایک دوسرے کو سنا جائے اور آپس پر طریقہ کار طے کیا جائے۔

متعلقہ خبریں