ایف آئی اے نے شہباز شریف کو 22جون کوطلب کرلیا

Shehbaz Sharif in court

فوٹو: آن لائن

ایف آئی اے اپوزیشن لیڈر شہباز شریف نے رمضان اور العربیہ شوگر ملز کیس میں 22جون کو طلب کرلیا۔

شہباز شریف پر الزام ہے کہ جب وہ وزیراعلیٰ تھے اس وقت انہوں نے چپڑاسی اور کلرکوں کے نام پر بینک اکاؤنٹس کھولے، وہاں سے شریف فیملی کے اکاؤنٹس میں 25ارب روپے منتقل ہوئے اور یہ رقم 2008 سے 2012 کے درمیان منتقل ہوئی۔

شہباز شریف کو نوٹس میں متعلقہ تمام ریکارڈ ساتھ لانے کا بھی کہا گيا ہے۔

ایف آئی اے کے نوٹس میں 4سوالات پوچھے گئے ہیں۔ یہ سوالات ملازمین کے اکاؤنٹس میں ٹرانزکیشنز، منی لانڈرنگ میں وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ کے استعمال، بیٹے سلمان شہباز کے کردار اور فیملی کے اثاثوں سے متعلق ہیں۔

لاہور: شہباز شریف کیخلاف کارروائی 8جولائی تک ملتوی

واضح رہے کہ مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف کے خلاف لاہور کی احتساب عدالت میں رمضان شوگر ملز اور منی لانڈرنگ ریفرنسز کی سماعت بھی چل رہی ہے۔

احتساب عدالت لاہور نے 14 جون کو قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی حاضری معافی کی درخواست منظور کرتے ہوئے کارروائی 8جولائی تک ملتوی کر دی تھی۔

متعلقہ خبریں