ایم کیوایم کے سابق رہنما انیس ایڈوکیٹ کی عبوری ضمانت منظور

انسداد دہشت گردی عدالت نے ایم کیوایم کے سابق رہنما انیس ایڈووکیٹ کی 4 مقدمات میں عبوری ضمانت منظور کرلی ہے۔

ہفتے کوانسداد دہشت کردی عدالت نےایم کیوایم کارکنوں کو ٹریننگ کیلئے بھارت  بھیجنے کے کیس کی سماعت کی۔ ایم کیوایم کے سابق رہنما انیس ایڈووکیٹ نے ضمانت کے لئے عدالت سے رجوع کیا۔ انیس ایڈووکیٹ کی 29 جون تک عبوری ضمانت منظور کرلی گئی اور1 لاکھ روپے کے مچلکے جمع کرانے کا حکم دیا گیا۔پولیس نے عدالت کو بتایا کہ انیس ایڈووکیٹ کی کچھ مشکوک بینک ٹرانزیکشن بھی سامنے آئی ہیں۔

اس سے قبل منگل کو کراچی میں پریس کانفرنس کرتےہوئےعمر شاہد نے بتایا تھا کہ کچھ ہفتے قبل ایم کیوایم لندن کے کارندوں کو پکڑا تھا اور سی ٹی ڈی میرپورخاص نے کارروائی کرتے ہوئے اسلحہ برآمد کیا۔گرفتار ہونے والوں کو میرپورخاص اورعمر کوٹ میں جاسوسی کے لیے معلومات اکھٹا کرنے کا ہدف دیا گیا تھا۔ ایم کیوایم لندن گروپ سے تعلق رکھنے والے بھی ملزمان گرفتارہوئےہیں اوران ملزمان نے انکشاف کیا کہ بھارت سے ٹریننگ حاصل کی ہے۔

انھوں نے بتایا کہ ایم کیوایم کے رہنما واسع جلیل اور سابق رہنما انیس ایڈووکیٹ نے لڑکوں کی بھارت ميں ٹریننگ کروائی۔ گرفتار ملزم نعیم کے مطابق اس کو ایران میں لڑکے جمع کرکے ٹريننگ کی ہدايت کی گئی تھی۔ انيس ايڈووکيٹ کو تحقيقات کيلئے بھی بلايا گيا تھا اورانيس ايڈووکيٹ اب ملک نہيں چھوڑسکتے ہیں اوران کا شناختی کارڈ بھی بلاک کرواديا ہے۔ڈی آئی جی سی ٹی ڈی نے مزید بتایا کہ گرفتار ہونے والے لڑکے شہر میں سلیپرسیل کے طور پر کام کررہے تھے۔

متعلقہ خبریں

ایم کیوایم کے سابق رہنما انیس ایڈوکیٹ کی عبوری ضمانت منظور,Anees advocate ki abori zamanat manzoor