این اے249: پولنگ کاوقت ختم، ووٹوں کی گنتی

Punjab By Elections

فائل فوٹو

تحریک انصاف کے رہنما فیصل واوڈا کے استعفے سے خالی ہونیوالی نشست این اے 249 میں ضمنی انتخاب کے لیے پولنگ کا وقت ختم ہوگیا اور اب ووٹوں کی گنتی جاری ہے۔

پاک سرزمین پارٹی کے مصطفیٰ کمال، تحریک انصاف کے امجد اقبال آفریدی، مسلم لیگ نون کے مفتاح اسماعیل اور پیپلزپارٹی کے قادر مندوخیل کے درمیان کانٹے کا مقابلہ متوقع ہے۔

ان کے علاوہ ایم کیو ایم پاکستان کے حافظ محمد مرسلین سمیت 30 امیدوار میدان میں ہیں۔

کراچی این اے249 ضمنی الیکشن: پولنگ کےروز عام تعطیل کااعلان

حلقے میں کچھ مقامات پرانتخابی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی دیکھنے میں آئی۔ایک پولنگ اسٹیشن پر پریزائڈنگ آفیسر نے دو بجے ہی فارم 45 پر پولنگ ایجنٹس سے دستخط کرالیے گئے تھے۔

پی ایس پی کے رہنما حسان صابر کے مطالبے پردستخط شدہ فارم 45منسوخ کردیے گئے جبکہ الیکشن کمیشن نے دوران پولنگ پی ٹی آئی کے 6 ارکان اسمبلی فردوس شمیم نقوی، راجا اظہر، سعید آفریدی، ملک شہزاد اعوان، بلال غفار ،شاہ نواز جدون اور نون لیگ کے کھیل داس کوہستانی کو حلقے سے نکل جانے کا حکم دیا تھا۔

الیکشن کمشنر کراچی سید ندیم حیدر کے مطابق حلقے میں 3 لاکھ 39 ہزار رجسٹرڈ ووٹرز ہیں، حلقے میں 276 پولنگ اسٹیشن بنائے گئے ہیں۔ جن میں سے مشترکہ پولنگ اسٹیشن 139ہیں۔

سید ندیم حیدر کا کہنا ہے کہ حلقے میں 92پولنگ اسٹیشن حساس اور 184انتہائی حساس قرار دیے گئے ہیں۔ انتہائی حساس پولنگ اسٹیشنز میں سی سی ٹی وی کیمرے بھی لگائے گئے ہیں۔

این اے249: پیپلزپارٹی سرکاری وسائل استعمال کررہی ہے، شاہدخاقان عباسی

واضح رہے کہ کرونا کے بڑھتے کیسز اور تیسری لہر میں شدت کے بعد ضمنی انتخاب ملتوی کرانے کیلئے عدالت سے رجوع کیا گیا تھا، تاہم دائر درخواست مسترد کردی گئی تھی۔

این اے249 کے عوام شیر کوووٹ دیں گے، مفتاح اسماعیل

حلقے میں سیاسی امیدواروں کے سنسنی خیز مقابلہ متوقع ہے۔  حلقے کے موقع پر ضلع غربی اور کیماڑی میں عام تعطیل ہے۔ حلقے میں کل 276 پولنگ اسٹیشنز قائم کیے گئے ہیں۔

متعلقہ خبریں