بلوچستان حکومت کا سرکاری ملازمین کی تنخواہیں 25فیصد بڑھانے کافیصلہ

حکومت اور بلوچستان ایمپلائز گرینڈ الائنس کے درمیان مذاکرات کامیاب ہوگئے، صوبائی حکومت نے مطالبات تسلیم کرتے ہوئے تنخواہوں میں 25 فیصد اضافے کا اعلان کردیا۔ سرکاری ملازمین نے کل (جمعہ کو) احتجاج کا اعلان واپس لے لیا۔

بلوچستان کا مالی سال 22-2021ء کا بجٹ کل (جمعہ 18 جون کو) صوبائی اسمبلی میں پیش کیا جائے گا، اس موقع پر بلوچستان ایمپلائز گرینڈ الائنس نے اپنے مطالبات کی منظوری کیلئے احتجاج کا اعلان کر رکھا تھا۔

وزیر خزانہ بلوچستان ظہور بلیدی نے بلوچستان ایمپلائیز گرینڈ الائنس کے رہنماﺅں کے ساتھ کامیاب مذاکرات کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے کا مطالبہ جائز تھا، جسے تسلیم کر لیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ بجٹ 22-2021ء میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 25 فیصد اضافے کا فیصلہ کیا گیا ہے، جس میں 15 فیصد ڈسپیریٹی الاؤنس شامل ہے، ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے کا باقائدہ اعلان بجٹ تقریر میں کیا جائیگا۔

وزیر خزانہ کا مزید کہنا تھا کہ ملازمین کی تنخواہوں میں مزید اضافہ معاشی حالات کی بہتری کے بعد کیا جائیگا۔

بلوچستان ایمپلائز گرینڈ الائنس کے کنوینر عبدالمالک کاکڑ نے اس موقع پر کہا کہ بلاشبہ حکومت بلوچستان معاشی مشکلات سے دوچار ہے تاہم مہنگائی کے تناسب کو دیکھا جائے تو گرینڈ الائنس کے مطالبات جائز ہیںگرینڈ الائنس حکومت بلوچستان اور وزیر اعلی بلوچستان کے مشکور ہیں۔۔ گرینڈ الائنس کل کا احتجاج ختم کر دیا۔

متعلقہ خبریں