بیماری بہانہ ہے نوازشریف جیل نہیں کاٹ سکتے،عثمان ڈار

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما عثمان ڈار کا کہنا ہے کہ سیکیورٹی اور بیماری صرف بہانہ ہے اصل بات یہ ہے کہ نوازشریف جیل نہیں کاٹ سکتے ورنہ وہ تو لندن میں پولو کھیل رہے ہیں۔
سماء کے پروگرام سوال میں گفتگو کرتے ہوئے عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ اگر ملک میں انصاف نہیں مل رہا تو ن لیگ کے سارے لیڈرز جیلوں سے باہر کیسے آ گئے۔
عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ حکومت میں رہتے ہوئے ہمیں اپنے معاملات صاف رکھنے چاہئیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ حمزہ شہباز کہہ رہے ہیں کہ ان کے اکاؤنٹ میں کروڑوں کا لین دین ہوا ہے مگر انہیں پتہ ہی نہیں چلا۔
رہنما تحریک انصاف نے کہا کہ شیخ رشید نے مسلم لیگ ن کو نوازشریف کی سیکیورٹی سے متعلق اچھی پیشکش کی ہے۔
انہوں نے کہا کہ اگر سیکیورٹی کا مسئلہ ہے تو سن 1999 میں معاہدہ کرکے کیوں بیرون ملک چلے گئے تھے اس وقت تو انہیں کوئی بیماری نہیں تھی۔
عثمان ڈار کا کہنا تھا کہ ن لیگی رہنماؤں سے جب بھی نوازشریف کی واپسی کا پوچھا جاتا ہے تو وہ بیماری کا بہانہ کرتے ہیں ورنہ نوازشریف پی ڈی ایم کے جلسوں سے دو دو گھنٹے تقریریں کرتے تھے۔
انہوں نے کہا کہ لندن میں بیٹھ کر نوازشریف مغرب کے خلاف بات نہیں کرسکتے یہ کام صرف عمران خان کرسکتے ہیں جن کی بیرون ملک کوئی جائیداد نہیں ہے۔
پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما مسلم لیگ ن جاوید عباسی کا کہنا تھا کہ ملک میں گزشتہ 20 سال جو دہشت گردی ہوئی اس کے پیچھے وجہ ملک میں امریکا کو فوجی اڈے دینے کا غلط فیصلہ تھا۔
عمران خان کے بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے جاوید عباسی کا کہنا تھا کہ امریکا کو اڈے دینے کے حوالے سے ہمارا فیصلہ یہی ہونا چاہیے لیکن اس بات کی وضاحت کی ضرورت ہے کہ امریکا نے اڈے مانگے بھی تھے یا نہیں۔
جاوید عباسی کا کہنا تھا کہ امریکا افغانستان سے نکلنے کی جلدی میں ہے لیکن جس طریقہ کار کا وہ کہہ رہا تھا وہ اس نے وضح نہیں کیا اور افغانستان ایک بار پھر خانہ جنگی کے دہانے پر ہے۔
انہوں نے کہا کہ عمران خان پہلے بھی اس قسم کی باتیں کرچکے ہیں مگر بعد میں وہ اپنی بات سے یوٹرن لے لیتے ہیں۔ ترکی اور ملیشیا کے ساتھ مل کر چینل بنانے کا اعلان کیا مگر بعد میں اس بات سے پھر گئے۔
جاوید عباسی کا کہنا تھا کہ عمران خان نے کہا تھا کہ آئی ایم ایف کے پاس جانے کی بجائے خودکشی کرلوں گا مگر بعد میں اسی کے پاس قرضہ لینے چلے گئے۔

متعلقہ خبریں