تصویر کے عقب میں نظر آنے والا طیارہ کون سا ہے؟

فائل فوٹو

پاکستان فضائیہ کے سربراہ ایئر چیف مارشل ظہیر احمد بابر سدھو ان دنوں ترکی کے سرکاری دورے پر موجود ہیں، جہاں بروز بدھ 30 جون کو انہوں نے ترک دفاعی صنعتوں کے صدر پروفیسر ڈاکٹر اسماعیل دمیر سے ملاقات کی۔

ملاقات کے بعد ترک اور پاکستانی عسکری اور سول حکام نے جدید ترین طیاروں کے سامنے گروپ فوٹو بنوایا۔ تاہم کیا آپ کو معلوم ہے کہ تصویر کے عقب میں کیموفلاج ڈیزائن میں نظر آنے والے یہ جدید ترین طیارہ کون سا ہے؟

یہ ہرجیٹ کے جدید ترین لڑاکا طیارے ہیں، جو ترکی میں تیار کیے جا رہے ہیں۔ یہ طیارے سنگل انجن پر مشتمل ہیں۔ سپر سونک ایڈوانس ٹریننر اور لائٹ کامبیٹ طیارے ترکی فضائی بیڑے کا اہم حصہ ہیں۔

ایچ آر آر ای ٹی کے تحت تیار ہونے والے طیارے 2023میں فضا میں نظر آئیں گے۔ توقع کی جارہی ہے کہ ہرجیٹ پروجیکٹ کے تحت تیار ہونے والے کو ٹی 38 طیاروں سے تبدیل کیا جائے گا۔ اس وقت ترک فضائیہ کے بیڑے میں 70 زیر استعمال ٹی 38 طیارے موجود ہیں۔

Turkish HURJET Project, The Next Advanced Jet Trainer and Light Attack Aircraft - YouTube طیارے کے تفصیلی ڈیزائن ، پروٹوٹائپ پروڈکشن اور زمینی جانچ کے مراحل کی تکمیل کے بعد 2022 میں بھی اس کی آزمائیشی پرواز کی جائے گی۔

ہرجٹ کو زیادہ سے زیادہ 1.2 ماچ کی رفتار اور 45,000،2721 فٹ کی اونچائی پر پرواز کیلئے ڈیزائن کیا گیا ہے۔ اس میں جدید ترین مشن اور فلائٹ سسٹم موجود ہوں گے۔ ہرجٹ کا لائٹ اٹیک ائیرکرافٹ ماڈل مثالی ہے۔ یہ طیارہ ہلکے حملے ، قریبی فضائی مدد ، بارڈر سیکیورٹی ، اور انسداد دہشت گردی جیسے آپریشنز میں افواج کی مدد کر سکے گا۔

دفاعی ماہرین کا کہنا ہے کہ ہرجٹ لڑاکا طیاروں ایل ایچ ڈی ٹی سی جی کو اناڈولو میں تعینات کیا جاسکتا ہے۔

کارکردگی

ٹاپ اسپیڈ: 1.4 مچ

سروس سیلنگ: 13,716،45,000 میٹر

حد: 2592 کلومیٹر / 1400 این ایم

کتنا وزن اٹھا سکتا ہے؟: 2721 کلوگرام / 6000 پونڈ

طیارے کی باڈی

طیارے کے پر 9.8 میٹر / 32.1 فٹ کے ہیں۔

لمبائی: 13 میٹر / 42.6 فٹ

اونچائی: 4.2 میٹر / 13.7 فٹ

ونگ ایریا: 24 مربع میٹر / 258.3 فٹ

متعلقہ خبریں