جہانگیر ترین اور علی ترین کی ضمانت میں 19 مئی تک توسیع

عدالت کا تفتیش جلد مکمل کرنے کا حکم

لاہور عدالت ن نے پی ٹی آئی رہنما جہانگیر ترین اور بیٹے علی ترین کی ضمانت میں 19 مئی تک توسیع کردی ہے۔

لاہور کی سیشن عدالت میں 3 مئی بروز پیر جہانگیر ترین کے خلاف منی لانڈرنگ کیس میں عبوری درخواست ضمانت کے معاملے پر سماعت ہوئی۔ سماعت جج حامد حسین نے کی۔ اس موقع پر جہانگیر ترین اور علی ترین نے حاضری مکمل کروائی۔

عدالت نے جہانگیر ترین اور علی ترین کی تفتیش جلد مکمل کرنے کا حکم دیتے ہوئے جہانگیر ترین اور علی ترین کی درخواست ضمانت میں 19 مئی تک توسیع کردی۔

سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو میں جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ تفتیش سے نہیں ڈرتا، انصاف ہونا چاہیے۔ ہم عدالت کے سامنے پیش ہوتے ہیں، ہم چاہتے ہیں عدالت شفاف طریقے سے کاروائی کرے۔ میرا کیس کریمنل نہیں، نہ ہی اس میں ایف آئی اے کا کوئی کردار ہے، اس کیس میں کوئی منی لانڈرنگ نہیں۔ یہ بزنس معاملات کا کیس ہے، اس میں پبلک فنڈ یا سیکرٹ فنڈ کا کوئی معاملہ نہیں۔ وزیراعظم نے علی ظفر کو کیس کی ذمہ داری سونپی ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ ایک سال سے میرے خلاف تفتیش ہورہی ہے۔ 78 پیشیاں بگت چکے ہیں، ہم کیس ختم کرنے کی بات نہیں کر رہے۔

سما کی جانب سے صحافی نے سوال کیا گیا کہ آپ کے لباس کا رنگ سفید، ہم خیال گروپ کے بیشتر ارکان کا لباس بھی سفید، چینی کا رنگ بھی سفید لیکن کیس آپ پر کالے دھن کا بنا، کیا عمران خان کے دل میں کچھ سیاہ آیا؟ جس پر جہانگیر ترین ہنس پڑے اور جواب ٹالتے ہوئے کہا کہ آپ کا سوال اچھا ہے لیکن یہ مذاق ہے۔

وفد کی وزیراعظم سے ملاقات پر پوچھے گئے سوال کے جواب میں جہانگیر ترین کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم سے اچھے ماحول میں ملاقات ہوئی، وزیراعظم سے میرے دوستوں کی ملاقات ہوئی تھی، سب کو معلوم ہے کہ جو کیسز ہو رہے ہیں اس کی بنیاد کچھ اور ہے۔ اپنی پارٹی میں بہت سے لوگوں کی حمایت حاصل ہے۔ پیپلز پارٹی، ن لیگ سمیت ہمارا کسی کے ساتھ رابطہ نہیں۔

شاہ محمود سے متعلق جہانگیر ترین نے کہا کہ شاہ محمود قریشی کے بیان پر کچھ نہیں کہنا چاہتا۔ ان کو ایسا کہنا سوٹ نہیں کرتا۔

قبل ازیں عدالت پیشی سے پہلے ارکان قومی اور صوبائی اسمبلی اور وزراء ماڈل ٹاون میں جہانگیر ترین کی رہائش گاہ پہنچے۔ رکن قومی اسمبلی راجہ ریاض احمد ، مبین عالم انور ، خواجہ شیراز ، غلام لالی اور سمیع گیلانی سمیت دیگر رہنما نے سماعت سے قبل ان کی رہائش پر ان سے ملاقات کی۔

متعلقہ خبریں