حکومت آزاد کشمیرکےانتخابات ملتوی کرکے چوری کرنا چاہتی ہے،پرویزاشرف

فوٹو: اے ایف پی

راجہ پرویز اشرف نے کہا ہے کہ آزاد کشمیر میں حکومت الیکشن ملتوی کروا کر چوری کرنا چاہتی ہے اور اس طرح کے حربے جہموریت کو کمزور کرتے ہیں۔

اسلام آباد میں پیر کو پیپلزپارٹی رہنماء اورسابق وزیراعظم راجہ پرویز اشرف نے پریس کانفرنس کرتےہوئے کہا کہ آزاد کشمیر اور پاکستانی عوام کے سامنے ایک اہم مسئلہ رکھنا چاہتے ہیں۔ آزاد کشمیر الیکشن کے حوالے سے موجودہ حکومت کو اپنی شکست یقینی نظر آرہی ہے اور حکومت انتحابات کو ملتوی کروانا چاہتی ہے کیونکہ حکومت کے پاس مختلف حلقوں میں امیدوار ہی نہیں ہیں۔ انھوں نے کہا کہ حکومت کو اراکین کے جوڑ توڑ میں کامیابی نہیں ہورہی ہے اورانتحابات ملتوی کروا کر حکومت چاہتی ہے کہ وفاداریاں تبدیل کرنے کا زیادہ موقع مل سکے۔

 پیپلزپارٹی رہنماء نے کہا کہ این سی او سی نے خط لکھ دیا ہے کہ انتحابات 2 ماہ کے لیے ملتوی کر دیے جائیں۔ تاہم کرونا بہانہ ہے اور آزاد کشمیر کا الیکشن اصل نشانہ ہے۔این سی او سی کا کیا یہ اختیار ہے کہ وہ انتحابات ملتوی کروانے کے لیے اسطرح خط لکھے؟۔

 انھوں نے سوال اٹھایا کہ گلگت کے انتحابات میں کیا کرونا نہیں تھا۔ جب زلزلہ آیا تو آدھے آزاد کشمیر کے پاس چھت نہیں تھی تاہم اس کے باوجود آزاد کشمیر میں الیکشن ہوا تھا۔

پرویز اشرف نے کہا کہ آزاد کشمیر کا آئین الیکشن کےحوالے سے بڑا واضح ہے۔ اسمبلی کی مدت ختم ہونے سے 60 دن پہلے الیکشن کروانا ہے اور29جولائی سے پہلے الیکشن کروانا آئینی زمہ داری ہے۔

معاشی صورتحال پر انھوں نے کہا کہ عمران خان کہا کرتے تھے کہ بجلی مہنگی ہو تو وزیراعظم چور ہے اورمہنگائی ہو تو وزیراعظم چور ہے۔ آج کیا صورتحال ہے اوراب تو آئی ایم ایف کے پاس پورا ملک گروی رکھا ہوا ہے۔ حکومت بجٹ میں کوئی چھوٹا موٹا ریلیف دینے کی کوشش کرے گی۔

اتوار کو پریس کانفرنس میں وزیراعظم آزاد کشمیر راجا فاروق حیدر نے کہا تھا کہ وفاقی حکومت آزاد کشمیر میں مرضی کے نتائج کی کوشش کر رہی ہے لیکن اس وقت آزاد کشمیر میں الیکٹرانک ووٹنگ کی گنجائش نہیں۔

متعلقہ خبریں