خیبرپختونخوا:مزدوروں اورسرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافےکا اعلان

خیبر پختونخوا حکومت نے اگلے مالی سال کے بجٹ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 25 فیصد جبکہ مزدوروں کی اجرت میں 4 ہزار روپے کا اضافہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔
پشاور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان کا کہنا تھا کہ گزشتہ بجٹ میں سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ نہیں گیا گیا تھا لیکن اس مرتبہ اس میں 25 فیصد اضافہ کیا جائے گا۔
محمود خان کا کہنا تھا کہ تنخواہوں میں اضافہ رواں سال جولائی سے ہوگا جبکہ صوبائی حکومت خیبر پختونخوا مزدوروں کی اجرت میں بھی اضافہ کردیا ہے اور یومیہ اجرت پر کام کرنے والوں کی کم سے کم ماہانہ اجرت 17 ہزار روپے سے بڑھاکر اب 21 ہزار روپے کردی گئی ہے۔
واضح رہے کہ اگلے مالی سال کے بجٹ کا اعلان ہونے سے قبل ہی محنت کشوں کی اجرت 21 ہزار روپے مقرر کرکے خیبر پختونخوا دیگر صوبوں پر بازی لے گیا ہے۔ مزدوروں کی کم از کم اجرت پنجاب میں 20 ہزار جبکہ بلوچستان اور سندھ میں 17 ہزار 500 روپے مقرر ہے۔
دریں اثناء شہریوں نے صوبائی حکومت کے اس اقدام کو سراہتے ہوئے اسے مہنگائی کی چکی میں پسنے والے عوام کے لیے تازہ ہوا کا جھونکا قرار دیا ہے۔
ایک شہری اسلم خان کا کہنا ہے کہ غریب مزدور کی تنخواہ 21 ہزار روپے کیا جانا ایک بہت اچھا فیصلہ ہے اور اس سے غریب افراد کا حوصلہ بڑھے گا۔
اس حوالے سے ایک اور شہری بلال امان کا کہنا ہے کہ بچوں کی تعلیم کا خرچہ اور دیگر اخراجات اتنے بڑھ چکے ہیں کہ ماہانہ ساڑھے 17 ہزار روپے سے کچھ نہیں ہوتا تھا لیکن صوبائی حکومت کی جانب سے کیے گئے اس اضافے سے لوگوں کی ضروریات خاصی حد تک پوری ہوسکیں گی۔

متعلقہ خبریں