خیبرپختونخوا: اسرائیلی بربریت کیخلاف شہرشہر مظاہرے

خیبرپختونخوا کے مختلف شہروں میں فلسطین میں اسرائیلی بربریت کیخلاف مظاہروں اور ریلیوں کا انعقاد کیا گیا جن میں ہزاروں کے تعداد میں مظاہرین نے شرکت کی اور فلسطینیوں کے تحفظ کے لیے امن فورس بنانے کا مطالبہ کیا۔

مرادن، چارسدہ، پارہ چنار،ہنگو،ٹانک ، مانسہرہ، میران شاہ، چترال سمیت خیبرپختونخوا کے مختلف اضلاع میں اسرائیلی مظالم کیخلاف ریلیاں نکالی گئیں۔ اس موقع پر مظاہرین نے حکومت سے اسرائیلی مصنوعات کے بائیکاٹ کا مطالبہ بھی کیا۔
مردان میں تحریک انصاف اور جماعت اسلامی کا فلسطینیوں کے حق اور اسرائیل کی جارحیت کے خلاف مظاہرے میں شرکاء نے اسلامی ممالک سے فلسطین کی حفاظت کے لیے مشترکہ فوج تشکیل دینے کا مطالبہ کیا۔
پاراچنار میں بھی فلسطین میں اسرائیلی جارحیت کے خلاف احتجاجی ریلی نکالی گئی ریلی میں ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی۔ اس دوران شرکاء نے اسرائیلی مظالم کے خلاف شدید نعرہ بازی کی۔
چارسدہ میں بھی مختلف سیاسی جماعتوں کی جانب سے فلسطین میں اسرائیلی جارحیت کیخلاف احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ جس میں تاجر برادری نے بھی کثیر تعداد میں شرکت کی۔
میرانشاہ میں جمعیت علماء اسلام کے زیر اہتمام فلسطین میں اسرائیلی جارحیت کے خلاف احتجاجی ریلی نکالی گئی۔ مظاہرین نے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر اسرائیل کے خلاف نعرے درج تھے۔
چترال میں جماعت اسلامی نے احتجاجی جلسہ کا انعقاد کیا جس سے مقامی رہنماؤں نے خطاب کرتے ہوئے اسرائیل کی شدید الفاظ میں مذمت اور اقوام متحدہ کی موجودہ پالیسی پر تنقید کی۔
بنوں میں بھی اسرائیلی جارحیت کے خلاف فلسطین کے حق میں احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ احتجاج میں شریک صوبائی وزیر ٹرانسپورٹ ملک شاہ محمد خان کا کہنا تھا کہ ہم اسرائیلی مظالم کے خلاف فلسطینیوں کے ساتھ غم میں برابر شریک ہیں۔
ضلع ہنگو اور ضلع اورکزئی میں سول سوسائٹی، سیاسی و سماجی جماعتوں کی طرف سے اسرائیلی جارحیت کے خلاف اور فلسطینیوں کی حمایت میں ریلیاں نکالی گئی۔
مانسہرہ میں بھی فلسطینیوں کے حق میں ریلی کا انعقاد کیا گیا ریلی میں عوام کی بڑی تعداد نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ شرکاء نے فلسطین کے مسلمانوں پر ظلم اور بربریت بند کرنے کا مطالبہ کیا۔ مثاہرین نے پلے کارڈز بھی اٹھائے ہوئے تھے جن پر اسرائیل مردہ باد اور دیگر نعرے درج تھے۔

متعلقہ خبریں