دہشتگردی کی منصوبہ بندی کرنےوالا گروہ کراچی سےگرفتار،شیخ رشید

لاہور دھماکے میں ملوث تقریبا تمام افراد کو پکڑلیا

وزیرداخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ دہشت گردی کی منصوبہ بندی کرنے والے گروہ کو کراچی سے پکڑا ہے۔

 پیر کو سماء کے پروگرام نیا دن میں بات کرتےہوئے وزیرداخلہ شیخ رشید احمد نے کہا کہ لاہور دھماکے میں ملوث تقریبا تمام افراد کو پکڑلیا گیا ہے اور اس کیس کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔ شیخ رشید نے مزید بتایا کہ کراچی سےبھی ایک خوفناک گروہ کو گرفتار کیا ہے جو ملک میں دہشت گردی کی منصوبہ بندی کررہے تھے۔شیخ رشید نے یہ بھی کہا کہ کراچی سے پکڑے جانے والے گروہ میں بھارتی جاسوس ادارہ راء ملوث تھا۔

جولائی میں آزاد کشمیر کے انتخابات سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ وہاں پی ٹی آئی کی حکومت بنے گی اور ان انتخابات میں پیپلزپارٹی کے اہم امیدوار اور نون لیگی امیدوار بھی کامیابی حاصل نہیں کرسکیں گے۔عمران خان نے 2 جولائی کے بعد راولا کوٹ ،میرپور اور مظفرآباد کا دورہ کرنا ہے۔ پی ٹی آئی کے جلسوں کے بعد اندازہ ہوجائے گا کہ عوام کس کے ساتھ ہے۔آزاد کشمیر میں پیپلزپارٹی کی سیاست ختم ہوجائے گی۔

شیخ رشید نے مزید کہا کہ پاکستان میں یہ بہت بڑا سانحہ ہے کہ سیاست دانوں کو اپنے لفظوں کی ذمہ داری کا احساس نہیں ہے۔ ملک میں جو بھی وزیراعظم رہا، اس کو سیکورٹی رسک قرار دیا گیا۔ عمران خان نے جتنا کشمیر کا کیس لڑا، کسی اور رہنما نے نہیں لڑا۔ عمران خان دنیا میں کشمیر کے تنازع کو مزید اجاگر کرے گا۔ وزیرداخلہ نے کہا کہ سیاست دان ملک میں جرات نہیں کرتے کہ زمینی حقائق کا اظہار کریں۔

شیخ رشید نے کہا کہ مذاکرات کے دروازے نہیں بند ہونے چاہئے۔ پاکستان ساری دنیا کو ساتھ لے کر چلنا چاہتا ہے۔ پاکستان کی سرحدیں کئی ممالک کے ساتھ ملتی ہیں۔ افغانستان کے حالات بدل رہے ہیں اور پاکستان طورخم اور چمن بارڈر پر بھی الیکٹرونک نظام لگا رہا ہے۔ پاکستان اور افغانستان کی سرحد کے 88 فیصد حصے پر باڑ لگ چکی ہے۔ ایران کے ساتھ سرحد کے 46 سے 48 فیصد حصے پر بھی باڑ لگ چکی ہے اور

اس سال ایران بارڈر کی فینسنگ ہوجائے گی۔انھوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں ترقی اور سکون اور استحکام کئی لوگوں کو نہیں پسند آتی۔ پاکستان کی سرزمین سے افغانستان پر کوئی حملہ نہیں ہوگا۔ پاکستان کو اپنا پڑوس دیکھنا ہے اور ہزار میل دور نہیں دیکھنا۔

فیٹف سے متعلق شیخ رشید نے کہا کہ وزارت داخلہ نے اس حوالے سے بہت محنت کی تاہم افسوس ہے کہ فرانس کی اس حوالے سے تحفظات ہیں۔

سیاست سے متعلق انھوں نے کہا کہ اپوزیشن تھکی ہوئی ہے اور اس میں دم نہیں ہے۔ آخری سال انتخابی مہم کا ہوتا ہے اور اس میں تیاری کی ضرورت ہوتی ہے۔ اپوزیشن ترنوالہ ہے اور یہ کچھ نہیں کرسکتے۔

متعلقہ خبریں