رشکئی اقتصادی زون کی زمین لیز پر دیں گے، وزیراعظم

رشکئی زون کا افتتاح کردیا

وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ملکی معیشت چل پڑی ہے۔ اچھا وقت آرہا ہے۔ صنعتوں سے ملکی دولت میں اضافہ ہوتا ہے۔ رشکئی اقتصادی زون کی زمین لیز پر دیں گے۔

نوشہر آمد پر تقریب سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان کا مستقبل انڈسٹریلائزیشن میں ہے، صنعتوں سے ملکی دولت میں اضافہ ہوتا ہے، دنیا میں تیزی سے ترقی کرنے والا ملک چین ہے، چین کی اقتصادی ترقی سے پاکستان بہت کچھ سیکھ سکتا ہے، رشکئی اقتصادی زون کی زمین لیز پر دیں گے، چین کی برآمدات میں اضافہ صنعتیں لگانے سے ہوا، ملکی اناج بیچنے سے معاشی ترقی نہیں ہوتی، ہمیں ایکسپورٹ پر توجہ دینی ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ مغرب کی انڈسٹریلائزیشن پرانے طرز کی ہے، ماضی میں برآمدات پر توجہ نہیں دی گئی، سرمایہ کار وہاں آتا ہے جہاں اسے منافع ملے، دوست ممالک فنڈنگ نہ کرتے تو پاکستان دیوالیہ ہو جاتا، قرضوں کی ادائیگی کیلئے ہمارے پاس پیسہ نہیں تھا، سرمایہ کاروں کو راغب کرنے کیلئے سہولتیں فراہم کر رہے ہیں، صنعتوں سے ملکی دولت میں اضافہ ہوتا ہے۔

وزیراعظم نے مزید کہا کہ ہم پر دباؤ ڈالا جا رہا تھا کہ لاک ڈاؤن لگا دو، دباؤ میں آکر لاک ڈاؤن لگا دیتا تو بھارت جیسا حال ہوتا، ہم نے اسمارٹ لاک ڈاؤن کے ذریعے اپنے لوگوں کو بچایا، جب روپیہ گرتا ہے تو ساری چیزیں مہنگی ہو جاتی ہیں، حکومت کے پہلے ڈیڑھ سال زندگی کے سب سے مشکل سال تھے۔ وہ کہتے تھے کہ گھبرانا نہیں تو عوام گھبرا جاتے تھے، مشکل وقت آتے رہتے ہيں ، جس طرح ہم کرونا سے نکلے شاید ہی تین چار ملک نکلے ہوں گے۔

مخالفین پر تنقید کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ جی ڈی پی گروتھ پر مخالفین بھی حیران ہیں، ہم دھاندلی سے جیتنے والے نہیں ، نیوٹرل امپائر سے جیتنے والے ہیں۔ ڈھائی سال پہلے پاکستان بینک کرپٹ تھا،قرضہ بڑھا ہوا تھا، اللہ کا شکر ہے ہم مشکل دور سے نکلے، ملک کو معاشی استحکام دیا۔

رشکئی اکنامک زون

قبل ازیں خیبر پختونخوا کے شہر نوشہرہ آمد پر وزیراعظم عمران نے چین کی انٹرپرائز کی 366 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری سے تعمیر رشکئی اکنامک زون کا افتتاح کیا۔ رشکئی خصوصی اکنامک زون پاک چین اقتصادی راہداری کلسٹر کا حصہ ہے۔

زون میں دواسازی ، ٹیکسٹائل ، فوڈ اینڈ بیوریجز، اسٹیل اور انجینیرنگ کی صنعتیں ہوںگی۔ منصوبے سے تقریبا 200،000 مقامی افراد کو ملازمت کے مواقع ملیں گے ہوںگے۔ چائنہ کی انٹر پرائز “سینچری اسٹیل پرائیویٹ لمیٹیڈ” کی 366 ملین ڈالر کی سرمایہ کاری سے اس کی تعمیر کا آج آغاز ہو رہا ہے۔ رشکئی ترجیحی خصوصی اکنامک زون چائنا پاکستان اقتصادی راہداری کلسٹر کا ایک حصہ ہے۔

منصوبے سے صوبے میں بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری اور روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے حوالے سے ایک اہم سنگ میل ثابت ہوگا۔ رشکئی ترجیحی خصوصی اکنامک زون چائنا پاکستان اقتصادی راہداری فریم ورک کے تحت خیبر پختونخوا حکومت اور خیبر پختونخوا اقتصادی زون ڈویلپمنٹ اینڈ مینجمنٹ کمپنی کا فلیگ شپ منصوبہ ہے۔ یہ ترجیحی خصوصی اکنامک زون تقریباً ایک ہزار ایکڑ اراضی پر محیط ہے

متعلقہ خبریں