روسی سیکیورٹی اتحاد کا افغان پناہ گزینوں کی میزبانی نہ کرنےکا اعلان

 

روس کی سربراہی میں کولیکٹیو سکیورٹی ٹریٹی آرگنائزیشن میں قازقستان نے کہا ہے کہ اس اتحاد کے اراکین کا افغانستان میں سیاسی و سلامتی کے بحران کے دوران پناہ گزین کی میزبانی کا کوئی منصوبہ نہیں ہے۔

سی ایس ٹی او میں سینٹرل ایشیا کے تین ممالک تاجکستان، کرغستان اور قازقستان شامل ہیں۔ ان میں تاجکستان کا افغانستان کے ساتھ ایک طویل بارڈر ہے۔

بی بی سی کے مطابق تاجکستان میں جمعرات کو رکن ممالک کے سربراہان کے ایک اجلاس کے دوران قازقستان کے صدر کا کہنا تھا کہ ’سی ایس ٹی او کا مشترکہ موقف ہے کہ ہمارے ممالک کی حدود میں افغان پناہ گزین اور غیر ملکی فوجی اڈے قابل قبول نہیں۔‘

سینٹرل ایشیا کے دو مزید ممالک ازبکستان اور ترکمانستان سی ایس ٹی او کے اراکین نہیں مگر یہ افغانستان کے ہمسایہ ممالک ہیں۔

ازبکستان نے کہا ہے کہ وہ صرف عارضی طور پر افغان پناہ گزین کی میزبانی کرے گا تاکہ وہاں سے انھیں دوسرے ممالک میں منتقل کیا جاسکے۔

تازہ ترین

ملا برادر دنیا کے بااثر افراد کی فہرست میں شامل
سندھ: 15سال کےبچوں کیلئے کرونا ویکسین لازمی قرار
لاہور: جمعہ اور ہفتہ کو مارکیٹیں بند کرنے کافیصلہ واپس
اسکول ڈیسکوں کی خریداری کامعاملہ سندھ ہائیکورٹ پہنچ گیا