ساجد سدپارہ نے بغیر آکسیجن دوسری بار ’کے ٹو‘ سرکرلیا

قومی ہیرو علی سدپارہ کے بیٹے ساجد سدپارہ نے بغیر آکسیجن دوسری مرتبہ دنیا کی دوسری بلند ترین چوٹی ’کے ٹو‘ سر کرلی۔ دو روز کے دوران 10 پاکستانیوں سمیت 21 کوہ پیماؤں نے کے ٹو پہاڑ سر کیا ہے۔

ساجد سدپارہ نے آج (بدھ کی) صبح ’کے ٹو‘ کی چوٹی پر سبز ہلالی پرچم لہرایا، انہوں نے کينيڈين فلم ميکر اور ايک نيپالی باشندے شرما کے ساتھ کے ٹو سر کرنے کا کارنامہ انجام ديا۔

ساجد سدپارہ دوسری بار بغیر آکسیجن ’کے ٹو‘ سر کرنے میں کامیاب ہوئے۔ رپورٹ کے مطابق اسی مشن کے دوران ساجد سدپارا کو اپنے والد سميت 2 کوہ پيماؤں کی لاشيں ملی تھيں۔

ساجد سدپارہ کا کہنا ہے کہ محمد علی سدپارہ سمیت دو کوہ پیماؤں کی لاشیں کھائی سے نکال کر بیس کیمپ 4 تک پہنچادی گئی ہیں، حکومت

واضح رہے کہ محمد علی سدپارہ فروری 2021ء کے پہلے ہفتے میں ’کے ٹو‘ سر کرنے کی کوشش میں دو غیر ملکی کوہ پیماؤں کے ساتھ لاپتہ ہوگئے تھے، انہیں 18 فروری کو مردہ قرار دے دیا گیا تھا۔

دو روز قبل محمد علی سدپارہ سمیت ایک غیر ملکی کوہ پیماء کی لاش بیس کیمپ 4 کے قریب ملی تھی، جس کی تصدیق گلگت بلتستان کے وزیر اطلاعات نے بھی کی تھی۔

متعلقہ خبریں