سب کو ہنسانے والا آدمی اب دنیا میں نہیں رہا

دُنیا بھر کی لاتعداد مزاحیہ میمز کا حصہ بننے والے ہسپانوی کامیڈین اسٹار 65 سال کی عُمر میں دُنیا سے رخصت ہوگئے۔

بی بی سی کی رپورٹ کے مطابق ایل ریسٹاس کا اصلی نام ہوآن جویا بورجا تھا لیکن زیادہ تر لوگ انھیں ایل ریسٹاس کے نام سے ہی جانتے ہیں جس کا مطلب ہے ’گیگلز‘ یعنی دبی دبی ہنسی۔

انٹرنیٹ پر بیشتر لوگ انھیں ’سپین کا ہنسانے والا آدمی‘ کے نام سے بھی پہچانتے ہیں۔

سال 2007 میں ہسپانوری کامیڈین اسٹار کو ایک شو میں مدعو کیا گیا تھا جہاں اُنہوں نے اپنے منفرد انداز میں قہقہے لگائے اور پھر وہ ویڈیو یوٹیوب پر اپلوڈ کردی گئی۔

بورجا، کوینٹرو کو بتاتے ہیں کہ کس طرح ایک رات انھوں نے 20 برتن سمندر میں چھوڑ دیے تاکہ وہ صاف ہو جائیں۔

اگلی صبح انھوں نے آ کر دیکھا کہ لہریں سب کچھ بہا کر لے گئی ہیں۔

اس کہانی کو سنانے کے بعد انھیں اور میزبان کو ہنس ہنس کر لوٹ پوٹ ہوتے اور میز پر ہاتھ مارتے دیکھا جا سکتا ہے۔ بس یہی وہ موقع تھا جب بورجا کی تقریباً بنا دانتوں والی مخصوص مسکراہٹ اس شو کا سب سے بہترین لمحہ بن گئی۔

بورجا 2014 میں نیشنل ٹیلی ویژن پر آنے کے بعد وائرل ہوئے تھے، وہ ایک کہانی سناتے ہوئے ہنسی سے لوٹ پوٹ ہو رہے تھے اور بس پھر کیا تھا یہ منظر ناظرین کو اتنا بھایا کہ انھوں نے اس پر ذیلی عنوانات ڈب کرنا شروع کردیے ۔

مقامی میڈیا کے مطابق بدھ کے روز اسپتال میں ان کی وفات ہوئی۔

بورجا کو گذشتہ سال طبی مسائل کی وجہ سے اسپتال میں داخل کیا گیا تھا، مارچ میں انھوں نے اپنے مداحوں کا فنڈ اکٹھے کرنے کی مہم کا انعقاد کرنے کے لیے شکریہ ادا کیا۔

یہ مہم ایک ٹانگ کٹ جانے کے بعد بورجا کو الیکٹرک موبلٹی سکوٹر دلانے کے لیے چلائی گئی تھی۔

متعلقہ خبریں