سرکاری خزانے سے ناشتہ، فن لینڈ کی وزیراعظم کیخلاف تحقیقات

فن لینڈ کی پولیس نے تصدیق کی ہے کہ وہ اس بات کی تحقیقات کرے گی کہ آیا ملک کی وزیراعظم کا ناشتہ ٹیکس ادا کرنیوالے شہریوں کے پیسے سے غیرقانونی طور پر خریدا جاتا ہے یا نہیں۔

یورپی ملک فن لینڈ کی وزیراعظم سنا مرین کے بارے میں ایک مقامی اخبار میں چند روز قبل خبر چھپی تھی کہ وہ اپنے اہلخانہ کے ناشتے کیلئے حکومت سے فی ماہ 300 یورو یا 365 ڈالر کا مطالبہ کررہی ہیں جبکہ وہ سرکاری رہائش گاہ کیسارینتا میں رہتی ہیں۔

خبر رساں ادارے اے ایف پی کی رپورٹ کے مطابق 35 سالہ وزیراعظم کا مؤقف ہے کہ یہ مراعات ان سے پہلے کے حکمرانوں کو بھی ملتی رہی ہیں۔

قانونی ماہرین کے مطابق وزیراعظم کے ناشتے کی شہریوں کی ٹیکس کی رقم سے ادائیگی فن لینڈ کے قانون کی خلاف ورزی ہے۔

اس حوالے سے فن لینڈ پولیس کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کو کچھ ناشتوں کی رقم ادا کردی گئی ہے جبکہ وزارتی معاوضے کے قانون میں اس قسم کی ادائیگی کی اجازت نہیں ہے۔

بیان میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ تحقیقات میں وزیراعظم کے دفتر میں موجود افسران کے فیصلے کی جانچ کی جائے گی۔ جمعہ کو سنا مرین کا ٹویٹر پر کہنا تھا کہ وہ اس بارے میں تحقیقات کا خیر مقدم کرتی ہیں اور جب تک یہ جاری ہیں وہ ان مراعات کا مطالبہ روک دیں گی۔

فن لینڈ کی سوشل ڈیموکریٹ سیاستدان نے جب سے دسمبر 2019ء میں اقتدار سنبھالا ہے، انہیں عوام میں مقبولیت حاصل ہے۔

واضح رہے کہ سینا میرین کو دنیا کی کم عمر وزیراعظم کا اعزاز حاصل ہے۔

متعلقہ خبریں