سندھ حکومت نے ’’بینظیر مزدور کارڈ‘‘ جاری کردیا

سندھ ميں رہنے والے تمام مزدوروں کوفائدہ ہوگا، بلاول بھٹوزرداری

سندھ حکومت نے صوبہ بھر کے مزدوروں کیلئے بے نظیر مزدور کارڈ کا اجراء کردیا۔ بلاول بھٹو زرداری نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے حکومت پر کڑی تنقید کی۔ ان کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی اور آئی ایم ایف کی ڈيل سے صنعتی نمو بری طرح متاثر ہوئی، جب صنعتی نمو رکتی ہے تو ملازمتوں کے مواقع بھی کم ہوجاتے ہیں، عوام آج تاریخی مہنگائی کا مقابلہ کررہے ہیں۔

کراچی میں یوم مزدور کی مناسبت سے یکم مئی کی تقریب کے دوران چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے سندھ حکومت کی جانب سے بے نظیر مزدور کارڈ کا اجراء کردیا۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ ليبر ڈے پر ہم بے نظير مزدور کارڈ متعارف کروا رہے ہيں، اس کارڈ کا فائدہ سندھ ميں رہنے والے تمام مزدوروں کو ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے 2008ء سے 2013ء تک مزدوروں کے حقوق کو تحفظ دیا، مزدوروں کے حقوق کی تحریک میں پی پی پی کا اہم کردار رہا ہے، پیپلزپارٹی نے سب سے پہلی لیبر پالیسی بنائی اور مزدور کو طاقتور بنایا۔

چیئرمین پیپلزپارٹی کا کہنا ہے کہ شہید بھٹو نے مزدوروں کو حقوق دلوائے، بینظیر کارڈ سے غریب خواتین کو مدد مل رہی ہے، بینظیر مزدور کارڈ سے صنعتوں میں کام کرنیوالے مزدور رجسٹرڈ ہوسکیں گے، مزدور کارڈ سے مزدوروں کو سہولیات مل سکیں گی۔

بلاول نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی حکومت ملکی معیشت ڈیل کے تحت چلارہی ہے، عوام آج تاریخی مہنگائی کا مقابلہ کررہے ہیں، پی ٹی آئی اور آئی ایم ایف کی ڈيل سے صنعتی نمو بری طرح متاثر ہوئی، جب صنعتی نمو رکتی ہے تو ملازمتوں کے مواقع بھی کم ہوجاتے ہیں۔

اس سے قبل وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے بتایا تھا کہ مزدوروں اور روزانہ اجرت پر کام کرنے والوں کی فلاح و بہبود کیلئے یہ کارڈ کسی بھی صوبے میں ’’اپنی نوعیت کا پہلا اقدام‘‘ ہے، جس کے تحت مفت تعلیم، صحت کی سہولیات اور بڑھاپے میں مالی معاونت فراہم کی جائے گی جبکہ حادثاتی موت کی صورت میں مزدور کے اہلخانہ کو بھی معاوضہ دیا جائے گا۔

واضح رہے کہ بینظیر بھٹو مزدور کارڈ کا معاہدہ گزشہ سال سندھ ایمپلائز سوشل سیکیورٹی انسٹی ٹیوشن (ایس ای ایس ایس آئی) اور نیشنل ڈیٹا بیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی (نادرا) کے درمیان طے پایا تھا، مزدور اپنے اسمارٹ کارڈ نادرا سے حاصل کرسکیں گے۔

متعلقہ خبریں