سندھ حکومت کاغیر ضروری گھرسےنکلنےوالوں کیخلاف کارروائی کاحکم

CM Sindh Murad Ali Shah

فوٹو: آن لائن

سندھ حکومت نے شہریوں کی نقل و حرکت محدود کرنے کیلئے رات 8 بجے کے بعد بلا ضرورت گھر سے نکلنے والوں کیخلاف کارروائی کا حکم دے دیا ہے۔

وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت کرونا وائرس کی صوبائی ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں صوبائی وزراء، ڈاکٹر عذرا فضل پیچوہو، سعید غنی، جام اکرام اللہ دھاریجو، چیف سیکریٹری، آئی جی پولیس، ایڈیشنل چیف سیکریٹری داخلہ، کمشنر کراچی، ایڈیشنل آئی جی کراچی، پرنسپل سیکریٹری، صوبائی سیکریٹریز، فنانس، اسکول ایجوکیشن، انڈسٹریز، صحت، ڈاکٹر باری، ڈاکٹر سجاد قیصر، ڈبلیو ایچ او کی ڈاکٹر سارہ اور دیگر متعلقہ افسران نے شرکت کی۔

اجلاس سے خطاب میں وزیر اعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ پورے ملک میں جتنے بھی کیسز ہیں ان کا 50 فیصد سندھ میں ہیں۔ ضلع شرقی اور ضلع وسطی میں ایس او پیز کی سب سے زیادہ شکایات مل رہی ہیں۔ اس موقع پر وزیراعلیٰ سندھ نے کمشنر کراچی کو ہدایت کی کہ وہ شہر میں ایس او پیز پر عمل درآمد کو ہرصورت میں یقینی بنائیں۔ اجلاس میں شہریوں کی نقل و حرکت محدود کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ منگل 25 مئی سے رات 8 بجے کے بعد لوگوں کو شہر میں غیر ضروری گھومنے کی اجازت نہیں ہوگی۔ آئی جی پولیس لوگوں کو غیرضروری طور پر گاڑیوں میں گھومنے سے روکیں۔ اگر کسی کو اسپتال یا کسی ضروری کام سے نکلنا ہو تو اسکو اجازت دی جائے۔ پارکس کی لائٹس رات 8 بجے تک بند کردی جائیں گی۔

اجلاس سے خطاب میں مراد علی شاہ کا یہ بھی کہنا تھا کہ عوام نے اگر تعاون کیا تو 2 ہفتوں کے بعد کیسز کم ہوجائینگے تو ہم بحالی کی طرف جا سکتے ہیں۔ کاروبار کے اوقات صبح 5 بجے سے شام 6 بجے ہونگے۔ بیکری اور ملک شاپ رات 12 بجے تک کھلے رہیں گے۔ ڈیپارٹمنٹل اور سپر اسٹور شام 6 بجے تک کھلے رہیں گے۔ جمعہ اور اتوار کے دن کاروبار مکمل بند رہیں گے۔ اگر ان اوقات کی خلاف ورزی ہوئی تو کارروائی کرونگا۔ اگر ہم نے دو ہفتہ لگائی گئی پابندیوں پر مکمل عمل کیا تو آگے آسانی ہوگی۔

وزیر اعلیٰ نے یہ بھی کہا کہ صورت حال کا جائزہ لینے کیلئے وہ خود سرپرائیز وزٹ کریں گے۔