سندھ یونیورسٹی کے دورے میں نثارکھوڑو کو خفت کا سامنا

طالبہ سندھ حکومت کے مشير پر برس پڑيں

سندھ يونيورسٹی کی طالبہ نے فيسوں ميں اضافے کا ذمہ دار وفاق کو ٹہرانے پر نثار کھوڑو پرغصے کا اظہار کردیا۔

سندھ يونيورسٹی کے دورے کے موقع پر پیپلزپارٹی رہنما نثار کھوڑو کو خفت کا سامنا کرنا پڑا۔ سندھ یونی ورسٹی کی طالبہ سندھ حکومت کے مشير پر برس پڑيں اور سوال کیا کہ یونی ورسٹی کی فيسيں کيوں بڑھائيں اور اس سلسلے میں وفاق کو ذمہ دار نہ ٹہرائيں۔

اس موقع پر نثار کھوڑو نے 15 فيصد کمی کا وعدہ کيا تو طلبہ نے اسے بھی ڈرامہ قرار دے ديا اور کہا کہ پہلے خود فيس بڑھاتے ہيں اور بعد ميں اس میں کمی کرکے لولی پاپ ديتے ہيں۔

 سندھ یونی ورسٹی کےوائس چانسلر نے بتایا کہ تنخواہ اور پنشن کا خرچہ 30 کروڑ روپے ہے۔آپریشن کا خرچہ 6 کروڑ روپے آتا ہے۔اس کے علاوہ صرف 19 کروڑ روپے کی گرانٹ ملی ہے۔اس لئے دیگر ذرائع سے بھی فنڈز جمع کئے جاتے ہیں۔طلبہ نےفیسس بڑھانے پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے احتجاج کا عندیہ دیا ہے۔

متعلقہ خبریں