سندھ: 15سال کےبچوں کیلئے کرونا ویکسین لازمی قرار

فوٹو: ٹوئٹر

سندھ میں 15سال کے بچوں کےلیے کرونا سے بچاؤ کی ویکسین لازمی قرار دیدی گئی۔

محکمہ صحت سندھ کے مطابق 15 سال کی عمر کےبچوں کو کرونا کی عالمی وبا سے محفوظ رکھنے کیلئے والدین کی مشروط اجازت سے ویکسین لگانے کی شرط ختم کردی گئی ہے۔

صوبائی محکمہ صحت کا کہنا ہے کہ ہیلتھ ورکرز کو کرونا ویکسین کی تیسری خوراک یا بوسٹر بھی لگائے جائیں گے اور تمام ہیلتھ ورکز کو فائزر ویکسین لگائی جائے گی۔

ملک میں15سے18سال کےبچوں کی کروناویکسینیشن 13ستمبرسےہوگی

اس سے قبل 6 ستمبر سے کراچی میں کرونا سے بچاؤ کیلئے تعلیمی اداروں میں 17 سال اور اس سے زائد عمر طلبہ کی ویکسینیشن کا آغاز کیا گیا تھا۔

محکمہ صحت و محکمہ تعلیم سندھ کی جانب سے تعلیمی اداروں میں نویں تا بارہویں جماعت کے طلبہ کو ویکسین لگانے کا فیصلہ اچانک تبدیل کردیا تھا جبکہ نئے نوٹیفیکشن کے تحت صرف 17 سال اور زائد عمر کے طلبہ کو ویکسین لگائی جارہی تھی۔

قبل ازیں اسکولوں میں طلباء کو ویکسین والدین کی رضامندی سے لگائی جارہی تھی۔

یاد رہے کہ ملک بھر میں 15 تا 18 سال عمر کے افراد کی ویکسینیشن 13 ستمبر ہوا تھا، جس میں بچوں کو فائزر ویکسین لگائی جارہی تھی۔

سندھ: نویں تابارہویں جماعت کے طلبہ کیلئے ویکسینیشن لازمی قرار

واضح رہے کہ ملک ميں کرونا وائرس سے جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 27 ہزار سے تجاوز کرگئی ہے جبکہ آج مزيد 66 مريض انتقال کرگئے۔

این سی او سی نے بتایا کہ کرونا کے باعث سب سے زیادہ پنجاب میں 28 اموات رپورٹ ہوئیں۔ خیبرپختونخوا میں 19 اموات ہوئیں۔سندھ میں 18  اوراسلام آباد میں 1 مریض کا انتقال ہوا۔ ملک میں کرونا کے فعال کیسز کی تعداد 76 ہزار 581 ہے۔ اس وقت 5 ہزار 590 مریض 640 اسپتالوں میں زیرعلاج ہیں

تازہ ترین

لوئر دیر: جنازے میں فائرنگ سے 6 افراد جاں بحق، 17 زخمی
پیٹرول کی قیمتوں میں اضافےکےبعد عمران خان اپوزیشن کےنشانےپر
فوادچوہدری اور اعظم سواتی کو الیکشن کمیشن کا نوٹس
وزیرخارجہ کی کالعدم تحریک طالبان پاکستان کومعافی کی مشروط پیشکش