سوات میوزیم: قدیم و حیران کن خزانوں کا امین

غیرملکی سیاح بھی تعریف کیے بناء نہیں رہ سکتے

گندھارا تہذیب کی امین وادی سوات میں ہزاروں سال پرانے آثار اپنی اصل حالت میں موجود ہیں اور ان ہی آثار سے ملنے والے نوادرات سوات کے عجائب گھر کی زینت بھی بنے ہوئے ہیں۔

پتھر کے زمانے سے کے ان نوادرات کا خزانہ محفوظ کرنے والا سوات کا ميوزيم غيرملکی سیاحوں کی توجہ کا مرکز بنا رہتا ہے۔حال ہی میں اسپین سے آئے سیاح بھی نوادرات کا یہ خزانہ دیکھنے کے بعد پاکستان کی تعريف کيے بغيرنہ رہ سکے۔ سیاحوں کا کہنا تھا کہ پاکستان کےمختلف علاقوں اور شہروں کے بعد جب ہم نے اس جگہ کا دورہ کیا تو یہاں بے انتہاء دلچسپ تاریخی آثار پائے۔سیاحوں کا کہنا تھا کہ جو ہم نے یہاں دیکھا وہ ہماری توقع سے کہیں بڑھ کر ہے اور یہ سیاحوں کے لیے ایک بہت بڑے خزانے کی حیثیت رکھتا ہے جسے برقرار رکھنا چاہیے۔سن 1963 میں قائم ہونے والا سوات میوزیم دنیا میں ایک منفرد اہميت و حیثیت رکھتا ہے۔ یہاں مختلف تہذیبوں کی دوہزار سے زائد اشیاء موجود ہیں۔اس عجائب گھرمیں سکندر اعظم کے دور کے سکے، بدھ مت کے مجسمے اور 4 ہزار سال پرانے مٹی کے برتن بھی موجود ہیں۔سوات عجائب گھر ہزاروں سال پرانے ورثے کا امین ہے اور یہاں موجود نایاب نوادرات نہ صرف ملکی بلکہ غیر ملکی سیاحوں کے ليے بھی کسی خزانے سے کم نہیں۔

متعلقہ خبریں