سورج آج خانہ کعبہ کے عین اوپر ہوگا

سورج سعودی وقت کے مطابق آج دوپہر 12 بج کر 18 منٹ پر خانہ کعبہ کے اوپر ہوگا، یہ اس سال کا پہلا واقعہ ہوگا۔

سعودی خبر رساں ایجنسی ایس پی اے مطانق سورج عین اوپر آنے پر خانہ کعبہ کا سایہ ختم ہوجائے گا، قدیم زمانے کے لوگ اسی سادہ طریقے سے قبلے کا رخ متعین کیا کرتے تھے۔ سربراہ انجمن فلکیات کے مطابق عرب ممالک، قطب شمالی کے پڑوسی علاقوں افریقہ اور یورپ کے باشندے اس موقع پر قبلے کی سمت متعین کرسکتے ہیں۔

سربراہ انجمن فلکیات نے مزید کہا کہ چین، روس اور مشرقی ایشیا کے باشندے بھی قبلے کی سمت کا تعین کرسکتے ہیں۔ یہ طریقہ کار نتیجے کے اعتبار سے جدید ترین ٹکنالوجی سے کسی درجے کم نہیں۔

فلکیاتی انجمن کے سربراہ ڈاکٹر ماجد ابو زاھرۃ کا کہنا ہے کہ سورج خانہ کعبہ کے اوپر نظر آنے کا واقعہ اس لیے رونما ہوتا ہے کیونکہ خانہ کعبہ خط استوا اور مدار السرطان کے درمیان واقع ہے۔ سورج گردش کے دوران خط استوا سے مدار السرطان کی طرف مئی کے مہینے میں منتقل ہوتا ہے اور گردش کرتے کرتے سورج خانہ کعبہ کے اوپر آ جاتا ہے۔

ماجد ابو زاھرۃ نے بتایا کہ سورج جس وقت خانہ کعبہ کے اوپر نظر آتا ہے وہ اپنی انتہائی بلندی پر تقریبا 90 درجے پر ہوتا ہے۔ یہ وہ لمحہ ہوتا ہے اس وقت خانہ کعبہ کا سایہ ختم ہوجاتا ہے۔

واضح رہے کہ سال 2020 میں 5 مرتبہ چاند، خانہ کعبہ کے اوپر آیا تھا، ​اس سے قبل خانہ کعبہ کے عین اوپر چاند دکھائی دینے کا منظر 2018 میں بھی دیکھا گیا تھا اور اسی سال 12 رمضان کو سورج بھی کعبہ شریف کے اوپر دکھائی دیا گیا تھا۔