سینیٹ انتخابات:پی ٹی آئی180سےزیادہ ووٹ حاصل کرےگی،فوادچوہدری

اپوزیشن کے 155 ووٹ ہونگے۔

وفاقی وزیرفواد چوہدری نے کہا ہے کہ اوپن ووٹنگ یا انتخابی اصلاحات کےلیےاپوزیشن مخالف ہے کیوں کہ ان کوامیدوارخریدنےہوتےہیں اوریہ پاکستان کی بدقسمتی ہے۔

بدھ کو سماء کے پروگرام نیا دن میں بات کرتےہوئے وفاقی وزیروزیرفواد چوہدری نے کہا کہ ہرانتخابات میں پیپلزپارٹی امیدواروں کوخریدتی ہے اور بکنے والےہرپارٹی میں موجود ہیں جن میں پی ٹی آئی اور پاکستان مسلم لیگ ن بھی شامل ہے۔ انھوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی کو امیدوار خریدنے سے کوئی فرق اور مسئلہ ہی نہیں ہوتا اور یہ اس کو معمول کی کارروائی سمجھتے ہیں۔

فوادچوہدری نے کہا کہ انتخابات میں پیپلزپارٹی کی جانب سے کرپٹ اقدامات پر پی ٹی آئی نے ریفرنس دائر کردیا ہے۔آرٹیکل 218 ، 219 اور 220 لاگو ہوگا جو کہ مجرمانہ قانون ہے۔ سیکشن ون سکس سیونٹی ون پی پی سی اس پر لاگو ہوتا ہے اور یہ ووٹر فراڈ اور قانون کی خلاف ورزی ہے،اس پر3 سال قید کی سزا ہے۔انھوں نے مزید کہا کہ پیپلزپارٹی کی ووٹ فراڈ سے متعلق جو ویڈیو سامنے آئی اس کا الیکشن کمیشن کے کہنے پر صرف ایک گھنٹے میں فرانسسک آڈٹ ہوسکتا ہے۔

فوادچوہدری نےمزید کہا کہ سینیٹ انتخابات روکنا نہیں چاہتےہیں اورآسانی سے جیت جائیں گے۔ ایسے انتخابات کا انعقاد چاہتے ہیں جس پر لوگوں کواعتماد ہو۔ہربار انتخابات میں پتہ چلتا ہے کہ کسی نے کروڑوں روپے لے لئے اور کسی نے دے دئیے۔اس سے اداروں پر لوگوں کا اعتماد نہیں رہتا۔

حفیظ شیخ سےمتعلق انھوں نےکہا کہ وہ پیپلزپارٹی کے وزیرخزانہ رہے ہیں اور پاکستان میں تمام ٹیکنوکریٹ میں سب سے اہم ہیں۔سینیٹ سیاسی فورم نہیں ہے اور یہاں ایکسپرٹس اور ٹیکنوکریٹس آتےہیں۔

انھوں نے دعویٰ کیا کہ سینیٹ انتخابات میں پی ٹی آئی 180 سے زیادہ ووٹ حاصل کرےگی۔اپوزیشن کے 155 ووٹ ہونگے۔

متعلقہ خبریں