شرلین چوپڑا نے راج کندرا پر جنسی ہراسانی کا الزام لگادیا

بھارتی اداکارہ و ماڈل شرلین چوپڑا نے شلپا شیٹھی کے شوہر اور بزنس مین راج کندرا پر جنسی ہراساں کرنے کا الزام لگایا ہے۔

  بھارتی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق فحش فلموں کے کیس میں ممبئی کرائم برانچ کے سامنے اپنا بیان دینے کے لیے پیش ہونے والی بالی ووڈ اداکارہ و ماڈل شرلین چوپڑا نے الزام لگایا ہے کہ راج کندرا نے انہیں مارچ 2019 میں جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا۔

اداکارہ نے مزید کہا کہ ماضی میں راج کندرا نے کام کے متعلق بات چیت کے لیے ان کے بزنس مینیجر سے رابطہ کیا تھا، ان کی میٹنگ 27 مارچ 2019 کوہوئی، بعد ازاں ایک بحث کے بعد راج کندرا بغیر بتائے ان کے گھر چلے آئے۔

شرلن چوپڑا نے شکایت میں دعوی کیا ہے کہ راج کے گھر پر آنے کے بعد انہوں نے اداکارہ کے منع کرنے کے بعد بھی زبردستی کس کرنے کی کوشش کی۔اداکارہ نے بتایا کہ انہوں نے راج کندرا کو کہا تھا کہ وہ ایک شادی شدہ مرد کے ساتھ کسی بھی قسم کے تعلق میں کوئی دلچسپی نہیں رکھتیں۔

اداکارہ شرلین نے بیان دیا کہ وہ راج کندرا سے خوفزدہ تھیں، انہوں نے دھکا دے کر کندرا کو خود سے دور کیا اور واش روم میں بھاگ گئیں۔

رپورٹس کے مطابق شرلین چوپڑا نے اپریل 2021 میں راج کندرا کے خلاف جنسی زیادتی کی ایف آئی آر درج کروائی تھی، اس سے قبل شرلین چوپڑا نے دعویٰ کیا تھا کہ وہ ان چند پہلے لوگوں میں شامل ہیں جنہوں نےبالغ فلم ریکٹ کے خلاف آواز اٹھائی۔

دوسری جانب ممبئی کی ایک عدالت نے بدھ کے روز راج کندرا کی ضمانت کی درخواست مسترد کردی تھی اور انہیں 14 روز کے لیے جوڈیشل ریمانڈ پر جیل بھیج دیا تھا۔

خیال رہے کہ راج کندرا فحش فلمیں بنانے اور انہیں موبائل ایپ پر چلانے کے الزام میں ممبئی پولیس کی کرائم برانچ کی ٹیم اس معاملہ میں کافی تیزی سے تفتیش کررہی ہے جبکہ اس معاملہ میں پولیس نے راج کو 19 جولائی کو گرفتار کرلیا تھا ۔

متعلقہ خبریں