شہبازشریف نے پاؤں پکڑنے والی بات محاورتاً کی، راناثنااللہ

رہنما مسلم لیگ رانا ثناءاللہ کا کہنا ہے کہ صدر ن لیگ شہبازشریف کو کسی کے پاؤں نہیں پکڑنے اور نہ ہی اس سے لوگ راضی ہوتے ہیں بلکہ انہوں نے یہ بات محاورتاً کی تھی۔
سماء کے پروگرام ایجنڈا 360 میں گفتگو کرتے ہوئے رانا ثناءاللہ کا کہنا تھا کہ شہبازشریف کا اپنا ایک نقطہ نظر ہے اور وہ چاہتے ہیں کہ ہم وہ سیاست کریں جس میں ملک کی بہتری ہو۔
راناثناء کا کہنا تھا کہ مریم نواز ہوں یا شہبازشریف سب کا مقصد ایک ہی ہے کہ ملک میں صاف وشفاف الیکشن ہونے چاہئیں اور اس بات پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔
انہوں نے کہا کہ اگر ہم مزاحمت چاہتے ہیں تو بھی اس کا مقصد کوئی خونیں انقلاب یا مسلح تصادم نہیں بلکہ ہمارا مقصد صرف ووٹ کو عزت دلانا ہے اور ووٹ کو عزت دو کا مطلب سویلین بالادستی اور عوامی مینڈیٹ کی عزت ہے۔
راناثناء کا کہنا تھا کہ عمران خان سے ہماری کوئی ذاتی دشمنی نہیں ہے بلکہ اختلاف صرف اس بات پر ہے کہ وہ ایک دھاندلی زدہ الیکشن کے نتیجے میں برسراقتدار آئے۔
انہوں نے کہا کہ سب ملک میں شفاف الیکشن چاہتے ہیں لیکن شہبازشریف کا خیال ہے کہ مقصد مفاہمت کے راستے سے بھی حاصل کیا جاسکتا ہے۔
میاں نوازشریف کے عدالتی فیصلے پر تبصرہ کرتے ہوئے راناثناء اللہ کا کہنا تھا کہ میاں نوازشریف جب آئیں گے ایک درخواست دیں گے اور اس کے بعد کیس پر میرٹ کے مطابق فیصلہ ہوگا۔
پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے رہنما تحریک انصاف علی نواز اعوان کا کہنا تھا کہ عدالت نے نوازشریف کو باربار پیش ہونے کا موقع دیا مگر وہ پیش نہیں ہوئے جس کے بعد عدالت نے انہیں مفرور قرار دیا تھا۔
علی نواز اعوان کا کہنا تھا کہ کارکن اپنے لیڈر سے یہ توقع کرتے ہیں کہ وہ ہمیں لیڈ کریں گے مگر قائد ن لیگ لندن میں بیٹھے ہوئے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ رسیدیں تو عمران خان سے بھی مانگی گئی تھیں مگر انہوں نے یہ نہیں کہا تھا کہ میرے خلاف سازش ہورہی ہے۔
علی نواز اعوان کا کہنا تھا کہ نوازشریف کی صحت کا کوئی مسئلہ نہیں ہے کیوں کہ کل مریم نے کہا تھا کہ میں جب کہوں گی نوازشریف واپس آجائیں گے۔

متعلقہ خبریں