شہباز شریف کو لاہور ایئرپورٹ پر بیرون ملک جانے سے روک دیا گیا

ہفتہ 8 مئی 2021 4:15

بتایا گیا کہ ان کا نام سسٹم میں تاحال بلیک لسٹ میں ہے( فوٹو ٹوئٹر)

مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف کو امیگریشن حکام نے لاہور ایئر پورٹ پر بیرون ملک جانے سے روک  دیا ہے۔
 مسلم لیگ ن کے رہنما عطا اللہ تارڑ کے مطابق سنیچر کی صبح  لاہور ایئرپورٹ پہنچنے پر حکام نے شہباز شریف کو بتایا گیا کہ سسٹم میں ان کا نام تاحال بلیک لسٹ میں ہے اس لیے انھیں سفر کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔
مزید پڑھیں
سوشل میڈیا پر شیئر کی جانے والی ایک ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ شہباز شریف کی جانب سے ایئرپورٹ حکام کو لاہور ہائی کورٹ کا فیصلہ دکھایا جا رہا ہے اور وہ کہہ رہے ہیں کہ ‘میں آپ سے بحث نہیں کر رہا، لیکن عدالت نے مجھے بیرونِ ملک جانے کی ون ٹائم اجازت دی ہے‘۔
مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے ایک بیان میں کہا کہ ’ ایف آئی اے نے شہباز شریف کا نام ایک اور لسٹ میں شامل کر دیا ہے‘۔
’ عدالت کے تحریری احکامات کے بعد ایک اور لسٹ میں شامل کرنا توہین عدالت ہے۔ عمران خان کے حکم پر ایف آئی اے توہین عدالت کر رہی ہے‘۔
انہوں نے یہ بھی کہا کہ’ فیصلے کے وقت ایف آئی اے کے دو افسران کمرہ عدالت میں موجود تھے اور یہاں یہ کہا جا رہا ہے کہ سسٹم اپ ڈیٹ نہیں ہوا ۔عدالت نے ون ٹائم پرمیشن دی تھی اور تحریری حکم نامے میں ایئرلاین کا نمبر بھی درج ہے‘۔
یاد رہے کہ لاہور ہائی کورٹ نے مسلم لیگ ن کے صدر اور قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے کی درخواست  منظور کرتے ہوئے انہیں ایک مرتبہ طبی بنیادوں پر بیرون ملک جانے کی اجازت دی تھی۔
جسٹس علی باقر نجفی نے شہباز شریف کی بلیک لسٹ نے نام نکالنے کی درخواست پر فیصلہ سنایا تھا۔
عدالتی فیصلے کے مطابق شہباز شریف کو آٹھ مئی سے تین جولائی تک بیرون  ملک علاج کی غرض سے جانے کہ اجازت تھی۔