طالبان، افغان حکومت میں سیاسی حل پر اتفاق ہوگیا

فوٹو: ڈیلی ٹائمز

طالبان اور افغان حکومت کے درمیان پرامن سیاسی حل پر اتفاق ہوگیا۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق ایران میں افغان حکومت اور طالبان کے درمیان مذاکرات ہوئے جس میں اسلامی ریاست کے قیام کے لیے مذاکرات جاری رکھنے پر اتفاق ہوا۔

طالبان اور افغانستان حکومت نے اپنے مشترکہ اعلامیے میں کہا ہے کہ جنگ افغانستان کے مسائل کا حل نہیں، تمام تر کوششیں پرامن سیاسی حل کے لیے ہونی چاہئيں۔

اعلاميے میں سرکاری املاک، مساجد اور اسپتالوں سمیت تمام عوامی اداروں پر حملوں ميں ملوث افراد کیخلاف سزا دینے پر بھی اتفاق کیا گیا ہے۔

دوسری جانب امریکی صدر جوبائیڈن نے افغانستان سے امریکی انخلا 31 اگست تک مکمل ہوجانے کا عندیہ دیا ہے۔

طالبان کا افغانستان کے 130سے زائد اضلاع پر قبضہ

امریکی صدر نے کہا کہ افغان مسئلے کے سیاسی حل کےلیے خطے کے ممالک کو آگے آنا ہوگا، جوبائیڈن نے امید کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ افغانستان سے امريکی فوج کے نکلنے کے بعد وہاں طالبان کا قبضہ نہيں ہوگا۔

امریکی صدر نے پريس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئےکہا کہ 75ہزار طالبان کے مقابلے ميں افغان فوج کی تعداد 3لاکھ ہے اور وہ بہتر جنگی سازوسامان سے ليس ہے۔

افغانستان میں افغان طالبان کا مزید 13اضلاع پر قبضہ

واضح رہےکہ طالبان اب تک ملک کے 130 سے زائد اضلاع اور 150 افغان ملٹری پوسٹوں پر قبضہ کرلیا ہے جبکہ بدخشاں کے ضلع واخان ميں صرف چار طالبان نے پورے ضلع پر کنٹرول کرليا۔

افغانستان کے ايک تہائی سے زيادہ اضلاع طالبان کے کنٹرول ميں آچکے ہيں۔

متعلقہ خبریں