طالبان کابھارتی قونصل خانے پرقبضہ،ترکی کوجنگ کی دھمکی

افغانستان میں طالبان مخالف ملیشیا سےصورتحال خراب ہوگی،پاکستانی سفیر

Your browser does not support the video tag.

افغانستان میں ايک کے بعد دوسرے علاقے پر اپنا کنٹرول سنبھالتے جانے کے علاوہ طالبان نے قندھار میں بھارت کا قونصل خانہ بھی اپنے قبضے میں لے لیا۔

بھارت نے گزشتہ روز قندھار ميں اپنا قونصل خانہ خالی کيا تھا۔ افغان طالبان نے ویڈيو جاری کی ہے جس ميں دکھايا گيا ہے کہ جاتے ہوئے بھارتی سفارتکاروں اور سيکيورٹی عملے نے اپنا سامان بھی پيک نہيں کيا۔

دریں اثناء ہلمند ميں ضلع گرمسير پر قبضہ کرنے کے بعد اب طالبان صوبائی دارالحکومت لشکر گاہ کی جانب بڑھ رہے ہيں جبکہ تخار کے بيشتر اضلاع بھی طالبان کے قبضے ميں ہيں ليکن افغان فوج انہيں پسپا کرنے کا دعویٰ کر رہی ہے۔

افغانستان ميں طالبان کا اثر و رسوخ اور وسائل ميں بھی اضافہ ہو رہا ہے ہرات صوبے کے ضلع چشت شریف میں طالبان نے درجنوں گاڑیاں قبضے میں لے لی ہيں۔

طالبان کی پيش رفت کے پیش نظر ایران نے نمروز، فرح اور ہرات بارڈر پر بھاری ہتھیاروں کے ساتھ فوج تعینات کر دی ہے۔

ترک صدر رجب طيب ايردوان کے مطابق کابل ايئرپورٹ کی حفاظت کے لیے امريکا اور ترکی ميں معاملات طے پاگئے جس کے بعد ايئرپورٹ پر ايئرڈيفنس سسٹم فعال کرديا گيا ہے۔

اس حوالے سے طالبان ترجمان سہيل شاہين نے کہا ہے کہ ترک صدر تاريخی غلطی کر رہے ہيں ترکی نے اگر کابل ايئرپورٹ پر فوج اتاری تو پھر کھلی جنگ ہوگی۔

افغانستان ميں پاکستان کے سفير منصور احمد خان کہتے ہيں طالبان کے مقابلے کے لیے ملیشیا کھڑی کرنا افغانستان میں صورتحال کو مزيد خراب کرے گا۔

متعلقہ خبریں