طالبان کا پاک افغان سرحد پرقبضہ، باب دوستی بند

برطانیہ طالبان حکومت تسلیم کرنے پر آمادہ

Your browser does not support the video tag.

طالبان نے پاک افغان سرحد پر قابض ہونے کے بعد باب دوستی بند کردیا۔

افغان طالبان کی افغانستان میں پیشقدمی تیزی سے جاری ہے اور اسپن بولدک کی مرکزی شاہراہ کا قبضہ سنبھالنے کے علاوہ باب دوستی پر بھی ان کا کنٹرول ہوگیا ہے جس کے بعد انہوں نے چمن سے متصل پاک افغان سرحد سیل کردی ہے۔طالبان نے مرکزی دروازے پر اپنا پرچم لہرا ديا اور پاکستانی سرحد سے ملحقہ افغان علاقے ويش منڈی پر بھی قبضہ کرليا ہے۔طالبان نے افغان پارليمان کے ارکان کو بھی عام معافی دے دی ہے۔ اس حوالے سے دعوت اور رہنما کميشن کے سربراہ امير خان متقی کا ویڈيو بيان بھی سامنے آیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ سب سن لیں کہ طالبان کی صوبائی دارالحکومتوں میں جنگ کی کوئی پالیسی نہیں اور مفاہمت کا راستہ اختیار کرکے کنٹرول سنبھالا جائے گا کیوں کہ ہم چاہتے ہیں کہ اداروں کے کاموں میں کوئی خلل نہ پڑے اور کاروبار زندگی و تجارت بدستور جاری رہے۔دریں اثناء نے برطانيہ طالبان حکومت کو تسليم کرنے کے ليے تيار ہوگيا اورا س نے طالبان کے ساتھ مل کر کام کرنے پر بھی آمادگی کا بھی اظہار کیا ہے۔اس حوالے سے برطانوی وزيردفاع بن ويلس کا بيان بھی سامنے آگيا۔ ان کا کہنا ہے کہ طالبان اقتدارميں آئے تو مل کر کام کريں گے تاہم انہوں نے توقع ظاہر کی ہے کہ طالبان ماضی کی غلطياں نہيں دُہرائيں گے۔

متعلقہ خبریں